کراچی میں جولائی کے مہینے میں پڑنے والی گرمی سے کتنے سال پرانا ریکارڈ ٹوٹ گیا؟جھلسا دینے والی تفصیل جانئے

کراچی میں جولائی کے مہینے میں پڑنے والی گرمی سے کتنے سال پرانا ریکارڈ ٹوٹ ...
کراچی میں جولائی کے مہینے میں پڑنے والی گرمی سے کتنے سال پرانا ریکارڈ ٹوٹ گیا؟جھلسا دینے والی تفصیل جانئے

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)کراچی میں جولائی کے مہینے میں گرمی کا 38 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا اور درجہ حرارت 42 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں جمعہ کوگرمی کا 38 سالہ ریکارڈ ٹوٹا ہے اور پارہ دوپہر 3 بجے 42 ڈگری کو چھو گیا تھا، درجہ حرارت مزید بڑھنے پر 62 سالہ ریکارڈ بھی ٹوٹنے کا امکان ہے تاہم شہرقائد کے مختلف علاقوں میں باران رحمت برس پڑی اور موسلادھار بارش سے موسم خوشگوار ہوگیا ہےجبکہ حبس اور گرمی کے ستائے شہریوں کے چہرے بھی خوشی سے کھل اٹھے ہیں۔محکمہ موسمیات کےمطابق 22جولائی 1982کو کراچی میں درجہ حرات 40 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا تھا، جولائی میں شہر کا درجہ حرارت مزید بڑھا تو گرمی کا 62 سالہ ریکارڈ بھی ٹوٹ سکتا ہے۔اس سے قبل کراچی میں 3 جولائی 1958 کو درجہ حرارت 42.2 سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا تھا۔گرمی کا ریکارڈ بننے کے بعد ہونے والی موسلا دھار بارش نے شہر کی فضا تبدیل کردی اور گرمی کی شدت کو کم کر دیا ہے۔ کراچی کے علاقے کلفٹن، آئی آئی چندریگر روڈ، صدر، گلستان جوہر، کورنگی، اختر کالونی، محمود آباد، منظور کالونی، ملیر، ایم جناح روڈ اور شارع فیصل سمیت مختلف علاقوں میں تیز بارش کا سلسلہ اب بھی جاری ہے جبکہ بارش کا سلسلہ شروع ہوتے ہی بجلی کی آنکھ مچولی کا بھی آغاز ہوگیا ہے۔بارش کے باعث کیماڑی کے علاقے جیکسن میں بجلی کے تاروں میں آگ لگ گئی، شکایت کے باوجود کے الیکٹرک کا عملہ بروقت نہ پہنچ سکا، علاقہ مکینوں نے اپنی مدد آپ کے تحت آگ بجھائی۔کراچی کے علاقے صدر میں بارش کی وجہ سے ٹریفک جام ہوگیا اور گاڑیوں کی لمبی قطاریں لگ گئیں، ٹریفک کی روانی متاثر ہونے سے شہری ٹریفک جام میں پھنس گئے۔دوسری جانب ایشیا کی سب سے بڑی مویشی منڈی میں بھی گہرے بادل چھاگئے اور تیزہوائیں چلنے لگیں ہیں، بیوپاریوں نے جانوروں کو بچانے کے لیے انتظامات شروع کردیے ہیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -