وارننگ کے باوجود یہ کام نہ کرنا مجرمانہ عمل ہے،مصطفی کمال نے کراچی کی شہری حکومت پر سنگین الزام عائد کردیا

وارننگ کے باوجود یہ کام نہ کرنا مجرمانہ عمل ہے،مصطفی کمال نے کراچی کی شہری ...
وارننگ کے باوجود یہ کام نہ کرنا مجرمانہ عمل ہے،مصطفی کمال نے کراچی کی شہری حکومت پر سنگین الزام عائد کردیا

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے اربن فلڈنگ کی وارننگ کے باوجود کراچی کے نالوں کی صفائی نہ کرنا مجرمانہ عمل ہے،شہر میں ایمرجنسی کی صورتحال پیدا ہورہی ہے لیکن بلدیاتی عملہ کہیں بھی نظر نہیں آرہا۔

سابق ناظم کراچی سید مصطفیٰ کمال نے بلدیاتی فنڈز کی عدالتی تحقیقات کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ بارش نے شہر کو سیورج کی غلاظت میں ڈبو دیا ہے،بلدیاتی حکومت کو نالوں کی صفائی کیلئے سالانہ 50 کروڑ روپے ملتے ہیں لیکن اس کے باوجود بڑے نالے صاف نہیں کئے گئے،جسکے باعث متعدد بیماریاں پھیلنے کے خدشات میں اضافہ ہوگیا ہے۔انہوں نےکہا کہ سڑکیں جو پہلے ہی ٹوٹ پھوٹ کا شکار تھیں بارش کے بعد مزید خراب ہوگئیں ہیں جس کے باعث حادثات میں اضافہ ہوگیا ہے، کراچی ایک لاوارث شہر کا منظر پیش کر رہا ہے کیونکہ حکومت سندھ اور بلدیاتی حکومت کے پاس کوئی پلان نہیں ہےجبکہ بارش کے دوران کے الیکٹرک کا ناقص ترین ترسیلی نظام اہل کراچی کے لیے موت کا پیغام بن گیا ہے۔

مصطفیٰ کمال کا کہنا تھا کہ حکمرانوں کی نظر میں انسانی زندگی کی کوئی حیثیت نہیں ہے، کوئی پوچھنے والا ہی نہیں ہے،کے الیکٹرک کو قابو میں رکھنے کا واحد طریقہ یہ ہے کہ کے الیکٹرک کی اجاراداری کو جلد سے جلد ختم کردیا جائے اور متعدد کمپنیوں کو بجلی کی ترسیل کے لائسنس جاری کیے جائیں لیکن حکمران ہماری بات ماننے کو تیار نہیں ہیں، اہلیانِ کراچی کو ہر سال لوڈ شیڈنگ اور زائد بلوں کا سامنا کرنے کے علاوہ بارش میں کے الیکٹرک کی نااہلی کے باعث انسانی زندگیوں کا ضیاع کو بھی جھیلنا پڑتا ہے۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -