وفاقی بجٹ عوام دشمن ہے الیکشن کو مدنظر رکھ کر بنایا گیا ، پاکستان اکانومی واچ

وفاقی بجٹ عوام دشمن ہے الیکشن کو مدنظر رکھ کر بنایا گیا ، پاکستان اکانومی ...

اسلام آباد (آن لائن) پاکستان اکانومی واچ کے صدر ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے کہا ہے وفاقی بجٹ عوام دشمن ہے جسے اگلے عام انتخابات جیتنے لے لئے بنایا گیا ہے۔ زرعی شعبہ کی ترقی کے نام پر ٹیکس چور جاگیرداروں کو نوازا جائیگا تاکہ انکے زیر اثر علاقوں سے ووٹ حاصل کئے جا سکیں۔ بجٹ نے ثابت کر دیا ہے کہ اکنامک مینیجرز پائیدار اور طویل المدت شر حِ نمو کے لئے درکار معاشی اصلاحات نافذکرنے کی صلاحیت سے عاری ہیں جس کی وجہ سے اس بار بھی مالدار افراد پر براہ راست ٹیکس نافذ کرنے کے بجائے غریب عوام کو ہی نشانہ بنایا گیا ہے۔ ڈاکٹر مرتضیٰ مغل نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ ٹیکس ٹو جی ڈی پی کی موجودہ شرح معاشی سرگرمیوں کے فروغ اور ملازمتوں کے مواقع پیدا میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے جسے دور نہیں کیا جا رہا۔ایف بی آر کے پاس بالواسطہ ٹیکس کے علاوہ کوئی آپشن نہیں جس سے غربت اور عدم مساوات میں اضافہ ہو رہا ہے جبکہ پیداواری عمل تباہ ہو رہا ہے۔ زرعی شعبے کا حصہ بھی جی ڈی پی میں بیس فیصد تک ہے لیکن یہ شعبہ ٹیکس ادا نہیں کرتا، ٹیکس کا زیادہ تربوجھ صنعت اٹھا رہی ہے،غیر ملکی سرمایہ کاری کا شعبہ بانجھ ہو چکا ہے جبکہ حکمران جماعت نااہلی،

بدانتظامی اور بدعنوانی میں مسلسل ترقی کر رہی ہے۔اس صورتحال میں اکنامک مینیجر عوام کوحقائق کے بجائے معیشت کی بہتر تصویر دکھاتے رہتے ہیں جس کی وجہ سے بجٹ کے فوراً بعد منی بجٹ کا سلسلہ شروع ہو جاتا ہے۔متعدد آزاد زرائع نے دعویٰ کیا ہے کہ جی ڈی پی کی نمو صرف 3.1فیصد تھی جسے حکومت نے 4.7 فیصد ظاہر کیا ہے۔بجٹ میں برامدکنندگان، دیہی اشرافیہ اور سرکاری ملازمین کو فائدہ ہوا ہے مگر عوام کو کوئی فائدہ نہیں ہوا۔ ۔

مزید : کامرس