موسم برسات میں گیندے کے پھول کی کاشت کر کے منافع کمایا جا سکتا ہے، محکمہ زراعت

موسم برسات میں گیندے کے پھول کی کاشت کر کے منافع کمایا جا سکتا ہے، محکمہ ...

راولپنڈی/ اسلام آباد (آن لائن) موسم برسات میں گیندے کے پھول کی کاشت کر کے منافع کمایا جا سکتا ہے۔ محکمہ زراعت پنجاب راولپنڈی کے ترجمان نے پھولوں کے کاشتکاروں کو گیندا کی کاشت کے متعلق آگاہ کیا ہے۔ گیندے کی دنیا بھر میں تقریباً 50 اقسام اور اس کی 500 کروڑ روپے کی سالانہ تجارت ہوتی ہے۔ یہ پھول گلدستہ اور ہار میں استعمال ہوتا ہے۔ موسم برسات میں گیندا کی کاشت جون میں مکمل کریں۔ اس کی کاشت کیلئے ریتلی میرا زمین اور اچھے نکاس والی زمین کا انتخاب کریں۔ ایک ایکڑ گیندے کی کاشت کیلئے 500 گرام بیج استعمال ہوتا ہے۔ گیندا عموماً بیج سے ہی کاشت کیا جاتا ہے اس لیے بیج لگانے سے پہلے کیاریوں کو اچھی طرح تیار کیا جاتا ہے۔ گیندے کی نرسری لگانے کے لئے 1x3 میٹر سائز کی کیاریاں بنائی جائے۔

۱ کیاریوں میں 10 کلوگرام فی مربع میٹر کے حساب سے گوبر کی گلی سڑی کھاد ڈالی جاتی ہے۔ بیج کی گہرائی 1/4 انچ رکھی جاتی ہے۔ کیاریوں میں بیج 2 سے 3 سینٹی میٹر کے فاصلہ پر اگایا جاتا ہے۔20 سے 25 دنوں کے بعد پودوں کو کھیتوں میں منتقل کر دیا جاتا ہے۔ قطار سے قطار کا فاصلہ 60 سینٹی میٹر اور پودے سے پودے کا فاصلہ 45 سینٹی میٹر رکھا جاتا ہے۔ پودوں کی منتقلی کے فوراً بعد پانی لگایا جاتا ہے۔ موسم برسات میں زمین اور موسمی حالات کو مدنظر رکھ کر پانی دینا چاہیے۔

مزید : کامرس