سندر کے رہائشی علاقے میں کوڑے کی ڈمپنگ کا منصوبہ لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج

سندر کے رہائشی علاقے میں کوڑے کی ڈمپنگ کا منصوبہ لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج

لاہور(نامہ نگارخصوصی )سندر کے رہائشی علاقے میں کوڑے کی ڈمپنگ کے منصوبے کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کر دیا گیاہے ، عدالت نے محکمہ ماحولیات کے سینئر افسر کو 23جون کو تفصیلی جواب سمیت طلب کر لیاہے۔مسٹرجسٹس سید منصور علی شاہ نے محمد احمد پنسوتا کی درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ پنجاب حکومت لاہور میں سندر کے علاقے میں 941 کنال اراضی پر کوڑے کی ڈمپنگ کا منصوبہ لگانے جا رہی ہے جس کے لئے اراضی ایکوائر کرنے کا عمل جاری ہے، محکمہ ماحولیات نے حکومت کو کہا تھا کہ فارما سیوٹیکل فیکٹریوں اور رہائشی علاقے سے دو سے تین کلو میٹر کے فاصلے پر کوڑے کی ڈمپنگ کا منصوبہ لگایا جائے تاکہ رہائشیوں کو کوڑے کی ڈمپنگ سے پیدا ہونے والی بدبو اور دیگر آلودگی کا سامنا نہ کرنا پڑے تاہم حکومت نے محکمہ ماحولیات کی گائیڈ لائنز نظرانداز کرتے ہوئے رہائشی علاقے میں ہی منصوبے پر کام شروع کر دیا ہے اور اراضی ایکوائر کرنے کے لئے رہائشیوں کو دھمکیاں دی جا رہی ہیں،انہوں نے استدعا کی کہ محکمہ ماحولیات کی گائیڈ لائنز کی خلاف ورزی پر کوڑے کی ڈمپنگ کا منصوبہ روکنے کا حکم دیا جائے اور منصوبے کے لئے اراضی ایکوائرکرنے کا عمل بھی روکا جائے، عدالت نے محکمہ ماحولیات کے سینئر افسر کو 23جون کو تفصیلی جواب سمیت طلب کر لیاہے۔

مزید : علاقائی