پانی اور بجلی کے بحران نے کراچی مسائلستان بنا دیا ہے :سراج الحق

پانی اور بجلی کے بحران نے کراچی مسائلستان بنا دیا ہے :سراج الحق

کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے جمعرات کے روز وزیر اعلی ہاؤس میں سندھ کے وزیر اعلی سید قائم علی شاہ سے ملاقات کی اور کراچی کے مسائل اور عوام کی مشکلات بالخصوص پانی کی قلت ، بجلی کی عدم فراہمی ، شہرمیں صفائی ستھرائی کے انتظامات اور ماس ٹرانزٹ پروگرام پر تبادلہ کیا ۔ وزیر اعلیٰ سید قائم علی شاہ نے امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق کو یقین دلایا کہ صوبائی حکومت ان سنگین مسائل کے خاتمہ کیلئے جلد مناسب اقدامات کرے گی ۔ملاقات میں امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن ،سیکریٹری کراچی عبدالوہاب ، نائب امیر مسلم پرویز ، سیکریٹری اطلاعات زاہد عسکری ، پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما راشد ربانی ، وقار مہدی اور لوکل گورنمنٹ کے وزیر جام خان شورو بھی موجود تھے ۔بعد ازاں سراج الحق نے پرنٹ و الیکٹرونک میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ کراچی کے عوام کے مسائل کی فہرست اور داستانیں بڑی طویل ہیں ۔ کراچی مسائلستان بن گیا ہے لیکن بعض مسائل بہت بڑے اور اہم ہیں اور ہم نے وزیر اعلیٰ سندھ قائم علی شاہ سے ان پر بات چیت کی ہے اور یہ مسائل اور شہر میں صفائی ستھرائی اور سڑ کوں کی بد حالی شامل ہیں ۔سراج الحق نے کہا کہ میرا کراچی کا دورہ ہے اس دوران میں نے ضروری سمجھا کہ کراچی کے مسائل پر صوبائی حکومت سے بات کروں اور اس لیے آج یہاں آیا ہوں ۔کراچی صرف ایک شہر نہیں بلکہ پورا پاکستان اور عالم اسلام کا ایک شہر ہے ۔یہاں مقامی آبادی کے ساتھ ساتھ ملک کے دیگر صوبوں اور علاقوں کے لوگ بھی آباد ہیں ۔کراچی کی آبادی بڑھنے کے ساتھ ساتھ یہاں کے مسائل بھی بڑھے ہیں ۔سراج الحق نے کہا کہ ہم نے وزیر اعلیٰ سندھ سے کراچی میں پانی کی قلت کی بات کی ہے ۔یہ ایک ایسا مسئلہ ہے جسے کوئی آدمی برداشت نہیں کر سکتا ۔طویل عر صے سے یہ بحران موجود ہے مگر اسے حل نہیں کیا گیا ۔شہر پر ایم کیو ایم نے حکمرانی کی ہے مگر ایم کیو ایم نے بھی مسائل حل نہیں کیے اور مسائل میں دوسوگنا اضافہ ہواہے ۔ وزیر اعلی سندھ سے K-4کے منصوبے پر بات ہوئی ہے اور ہم نے زور دیا ہے کہ اسے جلد ازجلد مکمل کیا جائے ۔ اس سے شہریوں کو پانی کی جو قلت کا سامنا ہے وہ قلت دور ہوسکے گی ۔ سراج الحق نے کہا کہ شہر میں ایک بڑا مسئلہ صفائی ستھرائی اور کچرے کو فوری اٹھانے کا مسئلہ ہے ،شہر کی گلیاں گندگی کا ڈھیر بن گئی ہیں ۔ ڈھائی کروڑ آبادی والے شہر کے لیے ٹرانسپورٹ کا کوئی موثر نظام موجود نہیں ہے ۔ لاکھوں افراد روزانہ شدید ذہنی و جسمانی اذیت اور پریشانی کے عالم میں سفر کرتے ہیں ۔ ماس ٹرانزٹ پروگرام شہریوں کا دیرینہ مطالبہ اور خواب ہے اور ایک عرصے سے اس پر کام رکا ہوا ہے۔ہمار ا مطالبہ ہے کہ یہ پروگرام فی الفور شروع کیا جائے ، وفاق اور سندھ کے بجٹ پیش کیے جاچکے ہیں لیکن کراچی کے لیے کسی بجٹ میں بھی بڑا حصہ نہیں رکھا گیا ہے ہمارا مطالبہ ہے کہ کراچی کے لیے ایک بڑا پیکج ہونا چایئے جو 500ارب کا ہو اور اس میں وفاقی اور صوبائی دونوں حکومتیں اپنا اپنا حصہ ڈالیں ۔انہوں نے کہا کہ واٹر بورڈ کے اندر بڑے پیمانے پر بوگس بھرتیاں کی گئی ہیں اور یہ ملازمین تنخواہیں تو لیتے ہیں مگر کام کہیں اور کرتے ہیں ۔سراج الحق نے کہا کہ ہم نے شاہ صاحب کو بتا یا ہے کہ کرپشن نے اداروں کو تباہ کر دیا ہے اور اس کینسر کو اب ختم کر نا چاہیئے ۔کرپشن کے خلاف ہر شہری کو اُٹھنا پڑے گا ۔

مزید : کراچی صفحہ اول