حکومت کپاس کی بیجائی کو ترغیب دینے میں ناکام ‘ رواں سیزن پیداوار کم ہوگی ‘ پی سی جی اے

حکومت کپاس کی بیجائی کو ترغیب دینے میں ناکام ‘ رواں سیزن پیداوار کم ہوگی ‘ ...

ملتان (سٹی رپورٹر)پا کستا ن کا ٹن جنرز ایسو سی ایشن (پی سی جی اے)کے چیئر مین شہز اد علی نے کہا ہے کہ حکو متی ادا رے کا ٹن سیزن 2016-17 کیلئے کپا س کی 14 فیصد کم بیجا ئی کے غلط اور بے بنیا د اعداد و شما ر دے رہے ہیں ۔ حکو مت کی طرف سے کھا د،زرعی ادویا ت کی قیمتو ں اور ٹیوب ویلوں کے بجلی کے نر خوں میں کمی خوش آئند ہے لیکن وفاقی و صو با ئی حکو متیں کا شتکاروں کو کپا س کی بیجا ئی کی تر غیب دینے میں نا کا م ہیں(بقیہ نمبر43صفحہ12پر )

۔کا ٹن سیزن 2016-17 میں کا ٹن سیزن 2015-16 کے مقا بلے میں کپا س کی پیدا وار کم ہو گی ۔وا ئس چیئر مین سرفراز نا ظم اعوان سا بق چیئر مینوں حا جی محمد اکرم ،سہیل محمو د ہرل کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کر رے تھے۔سنٹرل کا ٹن ریسرچ انسٹی ٹیوٹ (سی سی آرآئی)میں منعقد ہ کا ٹن کراپ منیجمنٹ گروپ کے اجلا س کے با ئیکا ٹ کے بعد انہو ں نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ صرف 14فیصد کمی کے اعدادوشما ر حقا ئق پر مبنی نہیں ہیں پنجا ب کے وزیر زراعت گزشتہ دو ما ہ سے وزیر اعظم کو امدادی قیمت مقرر کرنے اور ٹریڈنگ کا ر پو ریشن پا کستان (ٹی سی پی)کی جا نب سے 20 لا کھ گا نٹھ روئی کی خریداری کی خریدا ری کی سفارشات کیلئے خطو ط لکھ رہے ہیں دوسری جانب محکمہ زراعت کے افسران کا ٹن کراپ منیجمنٹ گروپ کے اجلا س میں صرف 14 فیصد کمی کا راگ الا پ رہے ہیں اور کھاد،پیسٹی سا ئیڈز سیکٹر اور حکو متی افسر سب ااچھا کی رپو رٹ دے رہے ہیں جو کہ صوبا ئی وزیر زراعت کے بیان کی بھی نفی ہے کا ٹن بیلٹ میں شوگر ملوں کی شفٹنگ کے نا م پر تنقید ،واہگہ با رڈر سے روئی کی امپورٹ کی جا رہی ہے جو ملکی معیشت کیلئے زہر قا تل ثا بت ہو رہے ہیں کا ٹن سیزن 2016-17 میں کپا س کی فصل میں غیر معمو لی کمی اور مو سمی حا لا ت ،سیلا ب ،با رشو ں اور آندھیو ں کی وجہ قرار دے دیا جا ئے گا۔ منسٹری آف ٹیکسٹائل کی طرف سے بھی واضح پا لیسی میں تا خیری کے با عث معیشت کی ترقی کمی کی طرف گا مزن ہے۔وزیر اعظم پاکستان،وزارت تجا رت ،وزارت نیشنل فوڈ اینڈ سیکیو رٹی ،وزارت خزانہ تما م سٹیک ہو لڈرز کی مشا ورت سے عمل کریں تاکہ جننگ انڈسٹر ی کو تبا ہی سے بچا یا جا سکے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر