ہولڈنگ کمپنیز کے لیے فنانس بل میں مجوزہ ترامیم کو ختم کرنے کی درخواست

ہولڈنگ کمپنیز کے لیے فنانس بل میں مجوزہ ترامیم کو ختم کرنے کی درخواست

کراچی (اسٹاف رپورٹر)اینگرو کارپوریشن کے صدر اور چیف ایگزیکٹو آفیسر خالد سراج سبحانی نے وزیرِ خزانہ، ریونیو اور اقتصادی امور اسحاق ڈار کو لکھے گئے حالیہ خط میں زور دیا ہے کہ وہ فنانس بل 2016 میں انٹر کارپوریٹ ڈویڈنڈس اور گروپ ریلیف میں surrender of losses کی مد میں لگائے گئے ٹیکسز کی مجوزہ ترامیم کو ختم کریں۔فنانس بل 2016 کے مطابق 2001 کے انکم ٹیکس آرڈیننس کی شق 59B کے تحت ایک گروپ اسٹرکچر کے انٹر کارپوریٹ کیلئے دی گئی ٹیکس کی چھوٹ ختم کرنے کی تجویز پیش کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ شق 59B میں ایک پابندی کے اضافے کی تجویز پیش کی گئی ہے جس کے تحت گروپ ریلیف کے اندر surrender of losses کو نقصانات برداشت کرنے والی entity میں ہولڈنگ کمپنی کی شرح فیصد ہولڈنگ تک محدود کیا جائے۔اس موقع پر اینگرو کارپوریشن کے سی ای او اور صدر نے 2007 میں کارپوریٹائزیشن اور کنسورشیم ریلیف کے فروغ کیلئے گروپ ٹیکسیشن کا نظریہ متعارف کرانے پر حکومت اور دیگر باڈیز کو سراہا اور پالیسی بنانے کے ساتھ ساتھ مجوزہ ترامیم ختم کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ گروپ ٹیکسیشن کے ذریعے اینگرو کارپوریشن اپنے ماتحت اداروں کی دیکھ بھال کے قابل ہو گیا ہے اور انہیں ملک کی کیپیٹل مارکیٹ میں پیش کر رہا ہے، liquidity، مارکیٹ سرمایہ کاری اور کاروبار کی شرح میں اضافے کے ساتھ ساتھ عام آدمی کو باقاعدہ بہترین طریقے سے منظم کاروباروں میں سرمایہ کاری اور اس سے فائدہ اٹھانے کا موقع فراہم کرتا ہے۔انٹر کارپوریٹ ڈیویڈنڈس میں چھوٹ ختم ہونے سے انٹر کارپوریٹ ڈویڈنڈس کے دگنے(کبھی کبھی تین گنا) ٹیکسیشن کے نتائج برآمد ہوں گے۔ مزید یہ کہ گروپ میں surrender of losses کی بنیادی شرائط میں سے ایک خاطر خواہ سود یا ہولڈنگ کمپنی کی جانب سے ماتحت کمپنی پر کنٹرول برقراررکھنا ہے۔ یہ عالمی سطح پر منظور شدہ اصول ہے کہ کنٹرول کے ساتھ ہی کسی بھی entity کو دوسری entity کے نقصانات سمیت تمام اثاثوں اور قرضوں کی نگرانی کرنے کا حق ہوتا ہے۔ اس طرح کے نقصانات سے فائدہ اٹھانے کے ہولڈنگ کمپنی کے حق پر پابندی ناصرف معاشی طور پر ناانصانی ہے بلکہ یہ عالمی سطح پر گروپ ٹیکسیشن کے نظریے کے قبول اصولوں کے بھی خلاف ہے۔اینگرو کارپوریشن نے چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت توانائی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کی ہے اور اس میں مزید سرمایہ کاری کا عمل جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اینگرو گروپ کا موجودہ ڈھانچہ موجودہ قانون سازی کے نتیجے میں اس طرح تیار کیا گیا ہے کہ سرمایہ کاری پر گروپ کی حکمت عملی کے مطابق نتائج دیے جائیں۔ فنانس بل میں مجوزہ ترامیم اینگرو گروپ کو اس کی موجودہ اور مستقبل کی سرمایہ کاری پر ازسرنو غور کرنے پر مجبور کر دے گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر