رینجرز نے پٹرول بیچنا شروع کردیا کاروبار کرنا ہے تواصل کام چھوڑ کر آٹا دال بھی بیچیں :جسٹس گلزار

رینجرز نے پٹرول بیچنا شروع کردیا کاروبار کرنا ہے تواصل کام چھوڑ کر آٹا دال ...
رینجرز نے پٹرول بیچنا شروع کردیا کاروبار کرنا ہے تواصل کام چھوڑ کر آٹا دال بھی بیچیں :جسٹس گلزار

  


کراچی (ویب ڈیسک)سپریم کورٹ نے پاکستان رینجرز سندھ کے پٹرول پمپ میں شیئرز اور کاروبار کرنے پر شدید اظہاربرہمی کرتے ہوئے ریمارکس دیئے ہیں کہ اگر کاروبار کرنا ہے تو اصل کام چھوڑ کر آٹا، دال، چاول بھی بیچیں صرف پٹرول کیوں بیچ رہے ہیں۔ عدالت عظمیٰ نے رقم کی کٹوتی کے خلاف درخواست سماعت کے لیے منظور کرتے ہوئے رینجرز حکام کو اور دیگر کو نوٹس جاری کر دیئے ہیں۔ کراچی رجسٹری میں رینجرز کے پٹرول اکاﺅنٹ میں 7لاکھ روپے کی کرپشن سے متعلق کیس کی سماعت میں رینجرز کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ رینجرز نے پٹرول پمپ میں شیئرز لے رکھے ہیں تاہم پمپ رینجرز کی ملکیت نہیں ہے۔ درخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ اسد اقبال رینجرز کا سپاہی ہے۔ اس کے اوپر پٹرول اکاﺅنٹ سے 7لاکھ روپے کی کرپشن کا الزام لگایا گیا ہے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں

رینجرز کے وکیل نے کہا کہ اسد اقبال کو 89روز حراست میں رکھا گیا ہے، اس سے 2لاکھ روپے وصول کیے گئے ہیں جبکہ تنخواہ سے ماہانہ رقم کی کٹوتی ہو رہی ہے، جس پر جسٹس خلجی عارف حسین نے کہا کہ ہمارے اور عوام کے ٹیکسوں سے ملنے والی تنخواہ سے بھی رقم کاٹی جارہی ہے۔ جسٹس گلزار احمد نے ریمارکس دیئے کہ جس پر کرپشن کا الزام ثابت ہوا ہے اسے نوکری پر کیوں رکھا ہوا ہے۔ کیا رینجرز نے پٹرول بیچنا شروع کردیا ہے۔ اگر کاروبار کرنا ہے تو اصل کام چھوڑ کر آٹا، دال، چاول بھی بیچیں صرف پٹرول ہی کیوں بیچ رہے ہی۔ اس ملک میں کیا ہو رہا ہے؟ جس ادارے کو دیکھو کاروبار میں لگ گیا ہے۔

مزید : کراچی