نوجوان جوڑے کے قتل کیلئے پنچائیت نے فیصلہ سنادیا، عمل درآمد کیلئے 21 افراد کے حلف دیئے جانے کی اطلاعات

نوجوان جوڑے کے قتل کیلئے پنچائیت نے فیصلہ سنادیا، عمل درآمد کیلئے 21 افراد ...
نوجوان جوڑے کے قتل کیلئے پنچائیت نے فیصلہ سنادیا، عمل درآمد کیلئے 21 افراد کے حلف دیئے جانے کی اطلاعات

  


اوکاڑہ (ویب ڈیسک)پسند کی شادی پر لڑکے کی بہن کو فوری طور پر ونی کرنے سے متعلق جرگے کے فیصلے پر عمل درآمد سے نہ ہونے پر 21 افراد نے قرآن مجید پر حلف دے کر جوڑے کو غیرت کے نام پر قتل کرنے کا اعلان کردیا جس کی اطلاع ملنے پر پولیس حرکت میں آئی اور  ڈی پی او اوکاڑہ نے ایس ایچ او کو کارروائی کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق اوکاڑہ کے نواحی چک 26جی ڈی کے رہائشی عامر اقبال اور شکیلہ بی بی نے اپنی مرضی سے 29مئی کو شادی کر لی جس پر شکیلہ کے والدین خوش نہ تھے۔ شکیلہ کے خاندان نے ایک پنچائت بلوائی جس میں عامر اقبال کے خاندان سے تقاضہ کیاگیا وہ اس کی ہمشیرہ 12 سالہ  طاہرہ بی بی کا رشتہ شکیلہ بی بی کے بھائی کو دے یا پھر عامر اقبال اور شکیلہ بی بی کو قتل کر دیا جائے۔

نوائے وقت کے مطابق عامر اقبال کے خاندان نے تسلیم کرتے ہوئے کہا کہ طاہرہ بی بی ابھی 12سال کی ہے ،بالغ ہونے پر رشتہ دے دیں گے جس پر برادری کی سطح پر بلائی جانیوالی پنچائت نہ مانی  اور 15جون کو اسی گاﺅں 26جی ڈی کے مسجد میں علی شیر، اللہ دتہ عرف حاجی، یارا، عدنان، شاہد، میر محمد، عالم شیر، اسحاق، اصغر، اکبر، رستم، ممتاز، امداد، اعجاز، عباس، چک 26جی ڈی احمان، موسم، مشتاق اور تین نامعلوم نے جرگہ کیا اور قرآن مجید پر ہاتھ رکھ کر اعلان کیاکہ شکیلہ بی بی اور عامر اقبال کو قتل کیا جائےاور مارنے والے کیلئے خرچہ اکھٹا کریں گے   تاہم اخبار کے دعوے کے علاوہ آزادانہ ذرائع سے اس کی تصدیق نہیں ہوسکی ۔ 

۔ اطلاع پر عامر اقبال کے والد امانت علی نے کھلی کچہری میں ڈی پی او اوکاڑہ کو ایک تحریری درخواست میں صورتحال سے آگاہ کیا جس پر ڈی پی او اوکاڑہ نے تھانہ گوگیرہ پولیس کو قانونی کارروائی کرنے کا حکم دے دیا۔

مزید : اوکاڑہ