بجٹ کا فلسفہ معیشت کی بحالی، عوام کو کورونا کے اثرات سے محفوظ رکھنا ہے: حفیظ شیخ

        بجٹ کا فلسفہ معیشت کی بحالی، عوام کو کورونا کے اثرات سے محفوظ رکھنا ہے: ...

  

اسلام آباد (این این آئی) وزیر اعظم کے مشیر بر ائے خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا ہے کہ محدود وسائل کے باجود آئندہ بجٹ میں عوام اور کاروبار کو زیادہ سے زیادہ ریلیف فراہم کرنے پر توجہ دی گئی ہے،نیا ٹیکس لگائے بغیر کاروباری لاگت میں کمی کیلئے اقدامات کئے گئے ہیں، اگلے بجٹ کا فلسفہ معیشت کی بحالی اور عوام کو کورونا کے مشیت پر منفی اثرات سے محفوظ رکھنا ہے۔انسٹی ٹیوٹ آف چارٹرڈ اکاونٹنٹس کے زیر اہتمام پوسٹ بجٹ کانفرنس سے بذریعہ ویڈیولنک خطاب کرتے ہوئے مشیر خزانہ نے کہا کہ کورونا کی عالمی وباسے قبل ملکی معیشت کی کاکردگی متاثر کن تھی تاہم وبا کے بعد برآمدات، ریٹیل خدمات، صنعت، اشیاء سازی سمیت تمام شعبے متاثر ہوئے اور معیشت کو تین ہزار ارب روپے کا نقصان کا تخمینہ ہے۔ حکومت نے عوام کے سماجی تحفظ کیلئے ایک کروڑ ساٹھ لاکھ خاندانوں کو ہنگامی کیش معاونت فراہم کی، چھوٹے اوردرمیانے درجے کی صنعتوں کے تین ماہ کے بجلی کے بل حکومت نے ادا کئے، کھانے پینے کی اشیاء کی مناسب داموں دستیابی کیلئے یوٹیلیٹی سٹورز کے زریعے سبسڈی دی۔ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ نے کہا کہ اگلے بجٹ میں بیس ہزار سے زائد مصنوعات پر ڈیوٹی ختم کی ہے، دیگر دو سو مصنوعات پر ڈیوٹی کو کم کیا، 166ٹیرف لائنز پر ریگولیٹری ڈیوٹی کم کی، سینٹ پر ایف سی ڈی کم کیا، ریٹیل آؤٹ لیٹس پر سیلز ٹیکس کم کیا ہے اور خریداری پر شناختی کارڈ کی شرط کو پچاس ہزار روپے سے بڑھا کر ایک لاکھ روپے کیا گیا ہے۔

حفیظ شیخ

مزید :

صفحہ آخر -