کابینہ اجلا س, پٹرول بحران پر وزراء کے ندیم بابر سے تابڑ توڑ سوالات

        کابینہ اجلا س, پٹرول بحران پر وزراء کے ندیم بابر سے تابڑ توڑ سوالات

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر)وزیر اعظم عمران خان کی زیر صدارت ہونے والی وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پٹرول بحران اور کورونا ادویات کی کمی پرتشویش کا اظہار کیا گیا جبکہ وزراء نے پٹرول قلت کے معاملے پر متعلقہ وزیر سے تابڑ توڑ سوالات کئے جبکہ وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے چینی بحران پر کمیشن بنا کر ذمہ داروں کیخلاف کارروائی کیلئے وزیر اعظم کو سفارش کر دی۔ذرائع نے بتایا کہ کابینہ اجلاس میں وزیراعظم عمران خان نے کورونا ادویات سے متعلق نوٹس لے لیا ہے جبکہ ڈریپ سے رپورٹ مانگ لی ہے،اجلاس میں پٹرول کی کمی پر ایک بار پھر طویل بحث کی گئی،وزراء پٹرولیم کے وزیر ندیم بابر سے سوالوں کے جواب مانگتے رہے،بابر اعوان نے ندیم بابر سے پوچھا کہ وزارت پٹرولیم نے کابینہ سے 3 دن میں بحران ختم کرنے کا وعدہ کیا تھایہ بحران ابھی تک ختم کیوں نہیں ہوا،بحران کے خاتمے کیلئے اقدامات کیوں نہیں کیے گئے؟ جس کے جواب میں ندیم بابر نے انکشاف کیا کہ مختلف پٹرول پمپس نے لاکھوں لیٹرز پٹرول ذخیرہ کررکھا ہے جس کی وجہ سے اس بحران نے جنم لیا ہے۔وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ندیم بابر صاحب پٹرول ذخیر کرنا کوئی نئی بات نہیں ہے،پہلے حکومتوں میں بھی ایسے ہی ہوتا رہا ہے،وزارت پٹرولیم بحران کی ذمہ داری قبول کرے جس پر ندیم بابر خاموش ہوگئے اور وزیر اعظم کی طرف دیکھتے رہے۔وزیر اطلاعات و نشریات شبلی فراز نے بھی پٹرول بحران پر غم و غصے کا اظہار کیا ہے اور کہا کہ اس بحران سے تحریک انصاف حکومت کو شدید نقصان پہنچا ہے، پٹرول کے حصول کے لئے گرمی میں لوگ سڑکوں پر خوار ہوتے رہے،انہوں نے وزیر اعظم سے مطالبہ کیا کہ چینی بحران کی طرز پر کمیشن بنا کر ذمہ داروں کا تعین کیا جائے اور ملوث کرداروں کیخلاف سخت کارروائی کی جائے۔

سوالات

مزید :

صفحہ اول -