بھارت کی ہندوتوا پالیسیاں علاقائی امن واستحکام کیلئے خطرہ ہیں، شاہ محمود

  بھارت کی ہندوتوا پالیسیاں علاقائی امن واستحکام کیلئے خطرہ ہیں، شاہ محمود

  

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ بھارت کی ہندوتوا پالیسیاں علاقائی امن واستحکام کیلئے خطرہ ہیں، عالمی برادری کو اس رجحان کا نوٹس لینا چاہیے۔ اسلام آباد میں قومی سلامتی کے بارے میں اعلیٰ سطح کے اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارتی حکام کی جانب سے غیر ذمہ دارانہ بیانات بھارت کی بوکھلاہت کا مظہر ہیں۔ بھارتی حکومت اپنی داخلی صورتحال سے دنیا کی توجہ ہٹانے کیلئے منفی ہتھکنڈے استعمال کر رہی ہے۔وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان خطے میں امن واستحکام کا خواہاں ہے جبکہ دوسری جانب بھارت کنٹرول لائن پر جنگ بندی معاہدے کی مسلسل خلاف ورزیاں کرتے ہوئے شہری ا?بادی کو نشانہ بنا رہا ہے جو عالمی قوانین اور بنیادی انسانی حقوق کی صریحاً خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے بھارتی عزائم سے متعلق اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل، اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے صدر اور اسلامی تعاون تنظیم کے جنرل سیکرٹری کو ا?گاہ کر دیا ہے۔وزیر خارجہ نے اس عزم کا اعادہ کیا کہ پاکستان افغان امن عمل کی کامیابی اورخطے میں استحکام کیلئے اپنی سنجیدہ کوششیں جاری رکھے گا۔اجلاس میں قومی سلامتی، علاقائی استحکام اور علاقے کی مجموعی صورتحال پر تفصیلی غور کیا گیا۔ قومی سلامتی کے بارے میں وزیراعظم کے معاون خصوصی ڈاکٹر معید یوسف اور دوسرے اعلیٰ حکام نے بھی اجلاس میں شرکت کی۔

شاہ محمود

مزید :

صفحہ اول -