اہلیہ کہتی ہیں وہ ایف بی آرکوکچھ نہیں بتائیں گی،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ کا موقف عدالت میں پیش کرنے کی پیشکش

اہلیہ کہتی ہیں وہ ایف بی آرکوکچھ نہیں بتائیں گی،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ ...
اہلیہ کہتی ہیں وہ ایف بی آرکوکچھ نہیں بتائیں گی،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ کا موقف عدالت میں پیش کرنے کی پیشکش

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ میں صدارتی ریفرنس کیخلاف درخواست پر سماعت کے دوران جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کمرہ عدالت پہنچ گئے۔جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ نے موقف عدالت میں پیش کرنے کی پیشکش کردی،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ اہلیہ ویڈیولنک کے ذریعے موقف پیش کرناچاہتی ہیں،اہلیہ کہتی ہیں وہ ایف بی آرکوکچھ نہیں بتائیں گی۔

نجی ٹی وی دنیا نیوز کے مطابق سپریم کورٹ میں صدارتی ریفرنس کیخلاف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کی درخواست پر سماعت جاری ہے، جسٹس عمر عطا بندیال کی سربراہی میں10رکنی لارجر بینچ سماعت کر رہا ہے،کیس کی سماعت کے دوران جسٹس قاضی فائز عیسیٰ کمرہ عدالت میں پہنچ گئے۔

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ سابق اٹارنی جنرل نے کہاساتھی ججزنے مددکی،جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ آپ اس بات کوچھوڑدیں،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ التجاکرتاہوں ان کیخلاف توہین عدالت کی کارروائی کی جائے،جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ ہم نے توہین عدالت کی کارروائی کی ہے۔

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ بحیثیت درخواست گزارذاتی حیثیت میں پیش ہورہاہوں،اگرکچھ غلط کہاتومیرے خلاف ہتک عزت کادعویٰ کریں،جسٹس قاضی فائز نے کہاکہ مئی کے آخرمیں یہ ساری باتیں شروع ہوئیں،مجھے ریفرنس کی کاپی فراہم نہیں کی گئی۔جسٹس قاضی فائزعیسیٰ کی اہلیہ نے موقف عدالت میں پیش کرنے کی پیشکش کردی،جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ اہلیہ کاپیغام لایاہوں،وہ جائیدادوں کے ذرائع بتاناچاہتی ہیں،اہلیہ کے والد کوکینسرکاعارضہ لاحق ہے،اہلیہ کہتی ہیں ایف بی آر نے ان کی تذلیل کی ہے، وہ ایف بی آرکوکچھ نہیں بتائیں گی،اہلیہ ویڈیو لنک پرجائیداد سے متعلق بتاناچاہتی ہیں،جسٹس عمر عطابندیال نے کہاکہ آپ کی اہلیہ ہمارے لیے قابل احترام ہیں۔

حکومتی وکیل بیرسٹر فروغ نسیم نے کہاکہ جج صاحب سے میری کوئی دشمنی نہیں،اگرمناسب جواب دیتے ہیں تومعاملہ ختم ہوجائےگا،میں جج صاحب اوران کی اہلیہ کا احترام کرتا ہوں۔

جسٹس قاضی فائزعیسیٰ نے کہاکہ اہلیہ کہتی ہیں اکاؤنٹ بتانے پرحکومت نیاریفرنس نہ بنادے،اہلیہ تحریری جواب جمع کرانےکی پوزیشن میں نہیں،اہلیہ کا موقف سن کرجتنے مرضی سوال کریں،انصاف ہوتا ہوا نظر آنا چاہئے۔

جسٹس یحییٰ آفریدی نے کہاکہ یہ مناسب نہیں حکومتی وکیل کوروک کرکسی کوموقع دیاجائے،جسٹس قاضی فائز عیسیٰ نے کہاکہ حکومت نے عدالتی تجویزسے اتفاق کیا،مجھے اس پرجواب دیناہے،عدالت میری اہلیہ کوویڈیولنک کے ذریعے موقف کاموقع دے،اعلیٰ عدلیہ کے ججز مشاورت کیلئے کمرے میں چلے گئے۔

مزید :

اہم خبریں -قومی -علاقائی -اسلام آباد -