لڑکی سے پیار کرنے کی سزا، نوجوان کو پیشاب پینے پرمجبور کردیا گیا

لڑکی سے پیار کرنے کی سزا، نوجوان کو پیشاب پینے پرمجبور کردیا گیا
لڑکی سے پیار کرنے کی سزا، نوجوان کو پیشاب پینے پرمجبور کردیا گیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت میں اپنی ہی کمیونٹی کی لڑکی کے ساتھ محبت کرنے کے جرم میں ایک نوجوان کو پیشاب پینے پر مجبور کر دیا گیا۔ ٹائمز آف انڈیا کے مطابق یہ واقعہ ریاست راجستھان کے شہر سروہی میں پیش آیا ہے۔ اس نوجوان کا تعلق سمرپور سے تھا۔ کمیونٹی کے سربراہوں کے حکم پر اسے سمرپور سے اٹھا کر سروہی لایا گیا اور وہاں بدترین تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد پہلے جوتے میں پانی پلایا گیا اور پھر پیشاب سے بھری بوتل اسے دے کر اسے پیشاب پینے پر مجبور کر دیا گیا۔

یہ واقعہ 5روز قبل پیش آیا لیکن پولیس گزشتہ روز اس وقت حرکت میں آئی جب اس نوجوان پر تشدد اور پیشاب پلائے جانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی۔ ایس ایچ او سمرپور رویندر سنگھ نے بتایا کہ نوجوان پر تشدد کے الزام میں 6لوگوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے تاہم ایس ایچ او نے اس واقعے کا ذمہ دار کمیونٹی سربراہوں کی بجائے لڑکی کے گھر والوں کو قرار دیا۔ انہوں نے بتایا کہ لڑکے کو لڑکی کے گھر والے پکڑ کر سروہی لائے تھے اور انہوں نے ہی اس پر تشدد کیا اور اسے پیشاب پلایا، کیونکہ وہ اپنی لڑکی کے ساتھ اس کے تعلق پر مشتعل تھے۔

مزید :

بین الاقوامی -