حکومت اپوزیشن کی آواز کیوں دبا رہی ہے ، بلاول بھٹو نے وجہ بتا دی 

حکومت اپوزیشن کی آواز کیوں دبا رہی ہے ، بلاول بھٹو نے وجہ بتا دی 
حکومت اپوزیشن کی آواز کیوں دبا رہی ہے ، بلاول بھٹو نے وجہ بتا دی 

  

اسلام آباد ( ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان پیپلزپارٹی چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ عمران خان نے بجٹ میں مزدور کی آمدنی 20 ہزار روپے مقرر کرکے 700 ارب روپے کے ٹیکس لگائے اور کہا کہ عزیز ہم وطنو! ملک ترقی کرگیا ہے۔

 میڈیا سیل بلاول ہاؤس سے جاری بیان میں چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ صرف ایک سال میں عام آدمی کی آمدنی میں 17 فیصد کی کمی اور کھانے پینے کی اشیاء کے خرچ میں 25 فیصد مہنگائی تبدیلی کا اصل چہرہ ہے۔ پی ٹی آئی حکومت غریب دشمن بجٹ کے حقائق کو عوام سے چھپانے کے لئے اپوزیشن کی آواز دبارہی ہے۔

بلاول بھٹو نے مزید کہا کہ ہر تین میں سے ایک بچے کے غذائی قلت کے شکار ملک میں عمران خان کی جانب سے دودھ اور اس سے وابستہ مصنوعات پر سیلز ٹیکس لگانے کے معاملے پر کہا کہ 40 فیصد غربت کے شکار ملک میں ڈیری مصنوعات پر 17 فیصد سیلز ٹیکس ہمارے بچوں کے قتل کے مترادف ہے، چائے کے ہر کپ کا مہنگا گھونٹ عمران خان کی تبدیلی کی وہ خوف ناک قیمت ہوگی جو پاکستان کے عوام نے ادا کرنا ہے، اس موقع پر انہوں نے خبردار کرتے ہوئے کہا کہ بجٹ کے نتیجے میں آٹا، تیل اور بجلی کی قیمتوں میں اضافہ مہنگائی کا ایک ایسا سونامی لائے گا کہ جس کے بعد عوامی ردعمل کو روکنا عمران خان کے بس میں نہ ہوگا۔

 چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے پارلیمان کی صورت حال کے حوالے سے کہا کہ اس موقع پر انہوں نے وزیراعظم کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان یہ نہ سمجھیں کہ گالم گلوچ اور بدتمیزی کرواکر وہ بچ جائیں گے، ہم بجٹ کا سارا کچاچٹھا عوام کے سامنے لاتے رہیں گے۔

مزید :

اہم خبریں -