مدرسے کے نو عمر طلبا کیساتھ زیادتی کرنے پر مفتی عزیز رحمان کیخلاف مقدمہ درج 

مدرسے کے نو عمر طلبا کیساتھ زیادتی کرنے پر مفتی عزیز رحمان کیخلاف مقدمہ درج 
مدرسے کے نو عمر طلبا کیساتھ زیادتی کرنے پر مفتی عزیز رحمان کیخلاف مقدمہ درج 

  

لاہور ( ڈیلی پاکستان آن لائن) جمعیت علماء اسلام (ف) کے لیڈر اور جامعہ اسد ال فاروق کے مولوی مفتی عزیز الرحمان کے خلاف مدرسے کے نو عمر بچوں سے بد فعلی کرنے پر دفعہ 377 اور 506 کے تحت مقدمہ درج کر لیا گیا۔

سوات سے تعلق رکھنے والے شکایت کنندہ کی جانب سے الزام عائد کیا گیا کہ 70 سالہ مذہبی عالم نے اسے بلیک میل کیا ۔ ایف آئی آر میں کہا گیا کہ مفتی عزیز رحمان نے متاثرہ بچے کو جنسی تعلق قائم کرنے کی پیشکش کی  اور انکار کی صورت میں مدرسے سے نکال دینے کی دھمکی دی ۔

درخواست گزار نے کہا کہ اسے عزیز رحمان کے بیٹوں اور طالبعلموں کی جانب سے جان کا خطرہ ہے ۔ بدھ کے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی جس میں عزیز رحمان کو ایک بچے سے جنسی زیادتی کرتے ہوئے پایا گیا ۔

ایک ویڈیو میسج بھی وائرل ہوا جس میں متاثرہ بچے کو نمناک آنکھوں کے ساتھ اپنی جان کو خطرہ لاحق ہونے کا ذکر کر رہا ہے ۔ واقعے کے فوری بعد عزیز رحمان کی جماعت کی جانب سے ان کی رکنیت ختم کر دی گئی ۔ 

دوسری جانب عزیز رحمان نے ویڈیو کو جھوٹا قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی عزت خراب کرنے کی کوشش ہے کیوں کہ مدرسہ انتظامیہ کو ان سے تحفظات ہیں ۔

مزید :

قومی -