پشاور زلمی بمقابلہ اسلام آباد یونائیٹڈ، سنسنی خیز میچ کا نتیجہ سامنے آگیا

پشاور زلمی بمقابلہ اسلام آباد یونائیٹڈ، سنسنی خیز میچ کا نتیجہ سامنے آگیا
پشاور زلمی بمقابلہ اسلام آباد یونائیٹڈ، سنسنی خیز میچ کا نتیجہ سامنے آگیا

  

ابوظہبی(ڈیلی پاکستان آن لائن )اسلام آباد یونائیٹڈ نے سنسنی خیز میچ میں پشاور زلمی کو 15رنز سے شکست دیدی۔

اسلام آباد کی جانب سے دئیے گئے 248 رنز کے تعاقب میں پشاور زلمی کی ٹیم232 رنز بناسکی۔ پشاور زلمی کو بڑے ہدف کے تعاقب میں پہلے اوور کی پہلی ہی گیند پر بڑا جھٹکا لگا اور اوپننگ بلے باز حضرت اللہ زازئی آؤٹ ہوگئے۔جس کے بعد امام الحق بھی سات رنز بناکر پویلین لوٹ گئے۔دونوں وکٹیں فاسٹ باؤلر عاکف جاوید نے حاصل کیں۔ابتدائی وکٹیں گرنے کے بعد کامران اکمل اور شعیب ملک نے جارحانہ بیٹنگ کی تاہم رن ریٹ مسلسل بڑھتا رہا۔کامران اکمل 32 گیندوں پر 53 رنز بناکر آؤٹ ہوئے ان کی وکٹ حسین طلعت نے حاصل کی،کامران اکمل کی اننگز میں سات چوکےا ور دو چھکے شامل تھے۔کامران اکمل کے آؤٹ ہونے کے بعد پاول بیٹنگ کے لیے مگر وہ صرف 11 رنز بناسکے اور عاکف جاوید کی گیند پر آؤٹ ہوگئے۔پاول کے بعد جیک ردرفورڈ بیٹںگ کے لیے تو انہوں نے پہلی گیند سے ہی جارحانہ آغاز کیااور ظفر گوہر کے ایک اوور میں چار چھکے لگا کر میچ کو دلچسپ بنادیا،وہ آٹھ گیندوں پر 29رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔جیک ردرفورڈ کے آؤٹ ہونے کے بعد اگلے ہی اوور میں شعیب ملک بھی پویلین لوٹ گئے انہوں نے 36گیندوں  پر 68 رنز بنائے،ان کی شاندار اننگز میں چھ  چوکے اور تین چھکے شامل تھے۔پشاور زلمی کی وکٹیں گرتی رہیں تاہم ہر آنے والے بلے باز نے جارحانہ بیٹنگ جاری رکھی اور میچ کا فیصلہ آخری اوور میں ہوا۔آخری اوور میں پشاور زلمی کو جیت کے لیے 23 رنز درکار تھے۔وہاب ریاض 28 اور عمید آصف 20 رنز بناکر ناٹ آؤٹ رہے۔

اسلام آباد کی ٹیم نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے ریکارڈ 247 رنز بنائے تھے۔ابوظہبی میں کھیلے جا رہے لیگ کے 26ویں میچ میں پشاور زلمی نے ٹاس جیت کر پہلے باؤلنگ کا فیصلہ کیا۔اوپنرز عثمان خواجہ اور کولن منرو نے اسلام آباد یونائیٹڈ کو عمدہ آغاز فراہم کیا اور پاور پلے میں نصف سنچری شراکت قائم کی۔یونائیٹڈ کی اوپننگ جوڑی نے ٹیم کو 98 رنز کا آغاز فراہم کیا لیکن 48 رنز بنانے والے کولن منرو اسپنر شعیب لک کی گیند سمجھنے میں ناکام رہے اور باؤلڈ ہو گئے۔آصف علی نے وکٹ پر آتے ہیں روایتی جارحانہ انداز اپنایا اور 14 گیندوں پر 43 رنز کی اننگز کھیلی لیکن وہ تیز ترین نصف سنچری کا اعزاز اپنے نام نہ کر سکے۔آصف نے ثمین گل کے ایک ہی اوور میں 22 رنز بٹورے لیکن اسی اوور میں وکٹ بھی گنوا بیٹھے۔

برینڈن کنگ اور خواجہ نے آصف علی کی طرح جارحانہ بیٹنگ کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے سنچری شراکت قائم کی اور صرف 43 گیندوں پر 102 رنز جوڑے۔عثمان خواجہ نے اننگز کے آخری اوور میں لگاتار دو چھکے لگا کر ناصرف سنچری مکمل کی بلکہ  پی ایس ایل میں کسی بھی ٹیم کے سب سے بڑے سکور کا نیا ریکارڈ بھی بنا دیا۔اسلام آباد نے مقررہ اوورز میں دو وکٹوں کے نقصان پر 247 رنز بنائے، عثمان نے 3 چھکوں اور 13 چوکوں کی مدد سے 105 جبکہ برینڈن کنگ نے 22 گیندوں پر 32 چھکوں اور 5 چوکوں کی مدد سے 46 رنز کی اننگز کھیلی۔

مزید :

PSL -PSL News Update -