کیا عمیرہ احمد نے ’دھوپ کی دیوار ‘کی کہانی بھارت کے کہنے پر لکھی ،آئی ایس پی آر کا اس کہانی کے بارے میں کیا کہنا تھا ؟ غداری کا الزام لگنے کے بعد مصنفہ خود میدان میں آگئیں 

کیا عمیرہ احمد نے ’دھوپ کی دیوار ‘کی کہانی بھارت کے کہنے پر لکھی ،آئی ایس پی ...
کیا عمیرہ احمد نے ’دھوپ کی دیوار ‘کی کہانی بھارت کے کہنے پر لکھی ،آئی ایس پی آر کا اس کہانی کے بارے میں کیا کہنا تھا ؟ غداری کا الزام لگنے کے بعد مصنفہ خود میدان میں آگئیں 

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )حال ہی میں پاکستانی ویب سیریز ’دھوپ کی دیوار ‘کا ٹریلر جاری کیا گیا ہے جسے دیکھنے کے بعد مصنفہ عمیرہ احمد کو تنقید کا نشانہ بنا یا جا رہا ہے ،اس ویب سیریز کو قوم ،ملک ،مذہب کے خلاف اور مصنفہ کو غدار قرار دیا جا رہا ہے ۔

اس حوالے سے وضاحتی بیان دیتے ہوئے عمیرہ احمد نے کہا ہے کہ 'دھوپ کی دیوار' کی کہانی اس وقت لکھی گئی جب پاکستان اور بھارت کے تعلقات اتنے خراب نہیں تھے اور نہ ہی کشمیر میں جو آئینی طور پر حالیہ تبدیلیاں کی گئی ہیں، وہ ہوئی تھیں۔مصنفہ نے بتایا کہ جب انہوں نے اس موضوع پر کام کرنا شروع کیا تو جنوری 2019 میں پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کو اس کی پوری کہانی بھیجی تھی اور اس وقت کی آئی ایس پی آر کی ٹیم کو کہانی کی جانچ کرنے کا کہا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ آئی ایس پی آر نے نہ صرف موضوع کو ٹھیک کہا تھا بلکہ انہوں نے راولپنڈی میں ایک ملاقات کی تھی۔ڈراما نگار کے مطابق آئی ایس پی آر نے ان سے کہا تھا کہ 'ہمارا پاکستان اور بھارت کے تعلقات کے حوالے سے یہی مو¿قف ہے کہ دونوں ممالک آپس میں بات چیت کریں اور لائن آف کنٹرول پر کشیدگی کے نتیجے میں فوجیوں کے ساتھ ساتھ شہری آبادی کے نشانہ بننے کی صورتحال ختم ہوجائے۔

عمیرہ احمد نے کہا کہ اگر موضوع غیر مناسب ہوتا تو اس پر لکھنے سے منع کردیا جاتا جبکہ کہانی کے لیے آئی ایس پی آر نے بہت زیادہ سپورٹ کیا۔انہوں نےمزید کہا کہ اگر آئی ایس پی آر کو دھوپ کی دیوار کے موضوع یا مواد پر اعتراض ہوتا تو وہ خواتین کیڈٹس کے حوالے سے سیریل پر کام کے لیے ان کا انتخاب نہ کرتے۔پیسے کے لیے ملک سے غداری اور بھارت کی جانب سے 'دھوپ کی دیوار' کی کہانی لکھوانے کے الزامات سے متعلق عمیرہ احمد نے دھوپ کی دیوار بھارت نے نہیں لکھوایا بلکہ انہوں نے ایک بنی ہوئی چیز خریدی ہے۔

مزید :

تفریح -