آج ختم نبوتﷺ کے قانون میں ترمیم کے لیے دباؤ ہے، مولانا فضل الرحمن کا انکشاف 

آج ختم نبوتﷺ کے قانون میں ترمیم کے لیے دباؤ ہے، مولانا فضل الرحمن کا انکشاف 
آج ختم نبوتﷺ کے قانون میں ترمیم کے لیے دباؤ ہے، مولانا فضل الرحمن کا انکشاف 

  

 اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)جمعیت علمائے اسلام ف کے امیر مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ آج ناموس رسالتﷺ اور ختم نبوتﷺ کے قانون میں ترمیم کے لیے دباؤ ہے،مدارس کےنئے بورڈز کا حشر بھی پرویز مشرف کے مدرسہ بورڈ جیسا ہوگا،وفاق المدارس کے خلاف سازشیں کہاں سے ہو رہی ہیں ؟ہمیں سب پتا ہے۔

وفاق المدارس کی مجلس عمومی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ ہماری معیشت ہی نہیں بلکہ قانون سازی تک عالمی اداروں کے پاس گروی رکھ دی گئی ہے،آج ناموس رسالتﷺ اور ختم نبوت کے قانون میں ترمیم کے لیے دباؤ ہے۔

انہوں نے دینی مدارس کے ذمہ داران کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ خبردار! کوئی چھوٹاسامدرسہ بھی لالچ میں آکر نئے بورڈوں میں نہ چلا جائے، مدارس اور وفاق المدارس کا ہرقیمت پر تحفظ کریں گے، اگر کوئی ڈنڈا لگا تو پہلے ہمارے سر پر لگے گا، آپ کو نہیں لگنے دیں گے، وفاق المدارس ہمارے لیے سائبان اور چھت ہے جس کے نیچے ہم سب اکٹھے ہو جاتے ہیں، وفاق المدارس ہے اور رہے گا اور اس کے خلاف ہرسازش ناکام ہو جائے گی،ہمیں اچھی طرح معلوم ہے یہ سازشیں کہاں سے ہورہی ہیں؟۔

مولانا فضل الرحمان نے کہا نئے بورڈز کا حشر بھی پرویز مشرف کے مدرسہ بورڈ جیسا ہوگا، پہلے بھی علماءکرام کو مشاہروں کالالچ دیاگیاجسےسب نےمتحدہوکرمسترد کردیا،آج پھرآپ کاامتحان ہے،جس میں آپ نے استقامت کا مظاہرہ کرنا ہے، مشکل وقت میں ہمت،استقامت اور بہادری سے کام لینا ہوتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ اور مغربی سرمایہ داری خودکو فاتح سمجھتی ہے اور ہماری تہذیب وتمدن پر حملہ آور ہے ، انہوں نے اسلامی تہذیب پر حملہ کیا ہے،اس لیے ہمیں آج سوچنا ہوگا کہ ہم ایک کالونی ہیں یا ایک ریاست ہیں ؟ ہمیں ایک ریاست اور اپنی تاریخ کی طرف جانا ہوگا اور اس کے لیے قربانی دینا ہوگی۔

مزید :

قومی -