”پنجاب اسمبلی“ کا اجلاس، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے کیخلاف قرار داد پیش

    ”پنجاب اسمبلی“ کا اجلاس، پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھانے کیخلاف قرار ...

  

     لاہور(نمائندہ خصوصی)سپیکر چودھری پرویز الٰہی کی زیر صدارت پنجاب اسمبلی کا اجلاس اسمبلی چیمبر میں شروع ہوا۔ تلاوت کلام پاک اور نعت شریف کے بعد محکمہ آبپاشی سے متعلق سوالات کے جوابات دیئے جانے تھے۔ تاہم متعلقہ وزیر کی غیر موجودگی کی وجہ سے سپیکر چودھری پرویز الٰہی نے وقفہ سوالات موخر کر دیا۔آج کے ایجنڈے میں صوبے میں گزشتہ 02ماہ سے جاری آئینی بحران پر بحث کی جانی تھی۔ بجٹ میں حصہ لیتے ہوئے  ڈپٹی اپوزیشن لیڈر محمد بشار ت راجا نے کہا کہ صوبہ پارلیمانی لحاظ سے تاریخ کے بد ترین آئینی بحران سے گزر رہا ہے۔ ووٹ کا استعمال ممبران اسمبلی کا آئینی حق ہے۔ مگر وزیر اعلیٰ پنجاب کے الیکشن میں انہیں اس حق سے محروم رکھا گیا۔ انہوں نے کہاکہ صوبے کے عوام فسطائی حکومت کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جا سکتا۔ حکومت صوبہ کے عوام کی تقدیر سے مت کھیلے۔ اپوزیشن لیڈر سبطین خان نے کہا کہ اسمبلی سے باہر کسی جگہ پر امپورٹڈ حکومت نے بجٹ پیش کیا، ابھی اس غیر آئینی بجٹ کا آپریشن ہونا تھا اس سے پہلے ہی  امپورٹڈ حکومت نے پیٹرول کا بم عوام پر گرا دیا۔اراکین اسمبلی محمد بشارت راجا، شوکت علی لالیکا، ندیم بارا، فیاض کاسترو اور سعدیہ سہیل رانا نے بھی خیالات کا اظہار کیا۔ ر کن اسمبلی وسیم خان بادوزئی نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف قرارداد پیش کی کہ یہ ایوان مسلسل تیسری دفعہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کو مسترد کرتا ہے اور یہ ایوان مطالبہ کرتا ہے کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ فوری طور پر واپس لیا جائے۔ سپیکر چودھری پرویز الٰہی نے کہا کہ اگلے ہفتے اس قرارداد پر بحث جاری رہے گی۔ بعد ازاں سپیکر چودھری پرویز الٰہی نے اجلاس پیر، مورخہ 20 جون 2022 دوپہر 2 بجے تک کے لئے ملتوی کر دیا

پنجاب اسمبلی

مزید :

صفحہ آخر -