شجاع آباد، رینجرزاہلکارقتل،بیوی سمیت دوافراد گرفتار

شجاع آباد، رینجرزاہلکارقتل،بیوی سمیت دوافراد گرفتار

  

ملتان(وقائع نگار)ملتان تھانہ صدر شجاع آباد میں 3سال قبل رینجرز اہلکار کے اغوا کے بعد قتل کا معمہ حل ہوگیا۔مقتول کی بیوی نے ملزم امام بخش کے ساتھ مل کر اپنے(بقیہ نمبر34صفحہ6پر)

 شوہر عبدالمجید کو قتل کر کے لاش گھر میں ہی دبا دی۔جس کے بعد پولیس نے دونوں مرکزی ملزمان امام بخش اور زبیدہ بی بی گرفتار کرلیا ہے۔ابتدائی تحقیقات کے مطابق ملزمہ کے 2 بھائیوں کا بھی قتل میں ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔واضح رہے پولیس تھانہ صدر شجاع آباد کو عبدالمجید کے بھائی احمد بخش نے پولیس کو اطلاع دی کہ اس کا بھائی جو رینجرز میں ملازمت کرتا ہے جو موضع بگڑیں اپنے گھر آیا ہوا تھا۔31 اگست 2019 سے لاپتہ ہے اور شبہ ظاہر کیا کہ عبدالمجید کی بیوی زبیدہ بی بی نے نامعلوم ملزمان کے ساتھ مل کر ہمارے بھائی کو اغوا کیا ہے۔پولیس تھانہ صدر شجاع آباد نے ملزمہ زبیدہ بی بی اور نامعلوم ملزمان کے خلاف اغوا کا مقدمہ درج کر کے کارروائی کا آغاز کر دیاپولیس نے اس دوران مقدمہ میں مختلف پہلوں سے تفتیش کرتی رہی اور شواہد اکٹھے کرتی رہی۔سی پی او ملتان خرم شہزاد حیدر کی ہدایت پر صدر شجاع آباد پولیس کی خصوصی ٹیموں نے اس مقدمہ پر کام کرتے ہوئے تفتیش کا دائرہ کار بڑھاتے ہوئے ملزم امام بخش کا ریمانڈ جسمانی لیا۔دوران تفتیش ملزم نے انکشاف کیا کہ اس نے ملزمہ زبیدہ بی بی کے ساتھ مل کر عبدالمجید کو قتل کر دیا تھا اور لاش کو گھر میں دبا دیا تھاملزم کی نشاندہی پر مقتول کی نعش کی باقیات اس کے گھر سے برآمد کی گئیں اور ملزمہ زبیدہ بی بی کو بھی گرفتار کر لیا گیا۔جبکہ ملزمہ کے بھائی فرار ہیں جن کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جا رہے ہیں۔ پولیس کے مطابق ملزمان نے انکشاف کیا کہ مقتول اپنی بیوی اور ملزم امام بخش کے درمیان تعلقات کا شک کرتا تھا جس وجہ سے اسے قتل کر کے گھر میں دبا دیا گیا ایس پی صدر ڈویژن سلمان لیاقت کی سربراہی میں ایس ایچ او تھانہ صدر شجاع آباد علی رضا نے اس مقدمہ کے تفتیشی افسر اسسٹنٹ سب انسپکٹر جہانگیر احمد کے ساتھ مل مقدمہ کو ٹریس کر کے ملزمان کو گرفتار کیا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -