پاکستانی تجارت کے فروغ کیلئے لندن میں ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ کانفرنس

پاکستانی تجارت کے فروغ کیلئے لندن میں ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ کانفرنس
 پاکستانی تجارت کے فروغ کیلئے لندن میں ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ کانفرنس

  



لندن (بیورورپورٹ) معیشت کے اہم شعبوں میں پاکستانی تجارت اورسرمایہ کاری کے امکانات کی تلاش کے لئے لندن کے لنکاسٹر ہاو¿س میں یو کے پاکستان ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ کانفرنس 2013 منعقد کی گئی جس کا اہتمام یو کے ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ دی پاکستان بریٹن ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ فورم اور پاکستان ہائی کمیشن نے مشترکہ طور پر کیا تھا ۔ اس کا مقصد دونوں ملکوں کے درمیان ان ہینڈ سٹریٹجک ڈائیلاگ میں بیان کردہ متن کے مطابق دونوں ملکوں کی دو طرفہ تجارت کا حجم 2015 تک ڈھائی ارب پونڈ تک پہنچانا ہے ۔سینئر منسٹر آف سٹیٹ سعیدہ وارثی نے اپنے کلیدی خطاب میں دونوں ملکوں کے تعلقات کا موجود صحت مند ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ کے حوالے سے جائزہ پیش کیا اور بتایا کہ سو سے زائد کمپنیاں پاکستان میں بزنس کے زیادہ تر مواقع سے فائدہ اٹھارہی ہیں۔ انہوں نے تعلیم کے شعبے میں پاکستان کی مدد کو خاص طور پر اجاگر کیا اور زور دیا کہ غیر ملکی کمپنیوں کے بزنس کے لئے پاکستان میں سیاسی استحکام ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ آزادانہ و منصفانہ انتخاب پاکستان میں سرمایہ کاروں کے اعتماد کو مضبوط تر کرینگے جو سرمایہ کاری کے لئے دلکش ملک ہے پاکستانی ہائی کمشنر واجد شمس الحسن نے کانفرنس کے آرگنائزر کو سراہا اور کہا کہ کانفرنس سود مند ہوگی۔ انہوں نے گوادر پورٹ کو چین کے حوالے کرنے اور ایران پاکستان گیس پائپ لائن کے معاہدے کو پاکستان خصوصاً بلوچستان کی ترقی کے لئے ناگزیر قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ الیکشن کے بعد اقتدار کی بحسن و خوبی منتقلی سیاسی استحکام لائے گی جس کی سیکورٹی اور معیشت کو بہتر بنانے کی اشد ضرورت ہے۔ فرانسز کمپبل نے کہا کہ پاکستان کا تجارتی ماحول اسی درجے کے متعدد ملکوں سے بہتر ہے۔ کانفرنس کی صدارت نوشین مبارک او بی ای چیئر پاکستان بریٹن ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ فورم اور چیئر سی بی آئی سکاٹ لینڈ نے کی، سرمایہ کاری کے بارے میں پینل ڈسکشن کو ڈائریکٹر جنرل آف دی کنفیڈریشن آف برٹش انڈسٹری جان کرڈلینڈ نے ماڈریٹ کیا جبکہ پینلسٹس میں ڈپٹی ہائی کمشنر کراچی اور ڈائریکٹر آف یو کے ٹریڈ اینڈ انوسٹمنٹ پاکستان فرانسز کمپبل چیف ایگز یکٹو آفیسر اینڈ فاو¿نڈر بی ایم اے فنڈر(پاکستان مدثر ایم ملک ندیم نقوی ایم ڈی دی کراچیسٹاک ایکسچینج اور شہزاد ڈاڈا چیف ایگزیکٹو آفیسر بارکلیز پاکستان تھے انہوں نے زور دیا کہ سرمایہ کار پاکستان کے بارے میں شر سرخیوں پر توجہ نہ دیں اورپاکستان کی مڈل کلاس کی فروغ پاتی مارکیٹ سے استفادے کے لئے سرمایہ کاری کریں۔

مزید : بین الاقوامی