بلوچستان کے سیاسی بحران کی نئی کروٹ ، وزراء”بغاوت“ کرگئے ، رئیسانی اقلیت میں رہ گئے،کابینہ اجلا س ملتوی

بلوچستان کے سیاسی بحران کی نئی کروٹ ، وزراء”بغاوت“ کرگئے ، رئیسانی اقلیت ...
بلوچستان کے سیاسی بحران کی نئی کروٹ ، وزراء”بغاوت“ کرگئے ، رئیسانی اقلیت میں رہ گئے،کابینہ اجلا س ملتوی

  



کوئٹہ (مانیٹرنگ ڈیسک) بلوچستان میں سیاسی بحران نے نئی کروٹ لے لی ہے اور وزراءکی اکثریت مستعفی ہوکر اپوزیشن کیساتھ مل گئی ہے جبکہ اتوار کی شام بلایاگیاصوبائی کابینہ کا اجلاس بھی ملتوی ہوگیاہے ۔مقامی میڈیا کے مطابق پیپلزپارٹی کے چودہ میں سے آٹھ جبکہ ق لیگ کے انیس میں سے سولہ وزراءاپوزیشن میں چلے گئے ہیں اور مستعفی وزراءنے نیا سیاسی اتحاد بنا کر جے یوآئی کے مولاناواسع کو اپوزیشن لیڈر ماننے سے انکار کردیاہے ۔ذرائع کے مطابق ایوان میں اپوزیشن لیڈر طارق مگسی کو اکثریت حاصل ہوگئی ہے جبکہ رئیسانی گروپ اقلیت میں ہے ۔وزراءکے مستعفی ہوجانے کی وجہ سے آج شام ہونیوالا صوبائی کابینہ کا اجلا س ملتوی کردیاگیاہے جبکہ انیس مارچ کو اسمبلی کی تحلیل کا معاملہ بھی مشکوک ہوگیاہے ۔ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی ، ق لیگ اور مسلم لیگ ن کی اکثریت غیر جانبدار نگران وزیراعلیٰ بنانے پر متفق ہوگئی ہے ۔

مزید : کوئٹہ /Headlines