پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات درست ہوجائیں گے ،جاوید جبار

پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات درست ہوجائیں گے ،جاوید جبار

کراچی (اسٹاف رپورٹر) سابق وفاقی وزیر اطلاعات جاوید جبّار نے CMC میں منعقدہ ایک تقریب میں ’’پاک بھارت تعلقات۔جانا انجانا مستقبل‘‘ پر گفتگو کی۔جاوید جبار نے کہا کہ پاک ۔بھارت تعلقات دنیا میں سب سے زیادہ پیچیدہ ہیں۔ پوری دنیا میں کوئی دو ملک ایسے نہیں جن کے مابین اسقدر پیچیدگیاں ہوں جتنی کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کے لوگوں کی ساتھ رہنے کی ایک طویل تاریخ ہے، لیکن ابھی تک ان میں بہت فرق موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے لوگوں کوانتہا پسند ذرائع ابلاغ کنٹرول کرتے ہیں۔مستقبل کے بارے میں بات کرتے ہوئے، جاوید جبار نے کہا کہ یہ بات کسی کو نہیں معلوم کہ مئی 2019 کے بعد بھارت میں کیا ہوگا؟۔ لیکن انہوں نے کہا نتیجہ کچھ بھی ہو، پاکستان اور بھارت کے بیچ تعلقات صحیح ہو جائیں گے، چونکہ تھرڈ پارٹی کی ثالثی کا آغاز ہو چکا ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ٹریک II کی سفارتکاری کا بھی دوبارہ آغاز ہوجائے گا ۔پاکستان ۔ بھارت تعلقات کے حوالے سے سینیٹر جاوید جبار نے کہا کہ مستقبل دونوں ممالک کے لوگوں کے کنٹرول میں ہے، لیکن انہیں ایک دوسرے کے بارے میں مثبت نفسیات اور رویہ کو فروغ دینے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کو اس بات پر یقین کرنے کی ضرورت ہے کہ وہ کس طرح اپنی مسلح افواج کو تیار کریں، اور اگر بھارت نے پاکستان کی سرحدوں کے قریب 70 سے 80 فیصد افواج تعینات کردیں، تو پھر پاکستان اس سلسلے میں کچھ نہیں کرسکتا، اور اس بات کی ذمہ داری صرف بھارت کی ہوگی۔جاوید جبار نے ، کہا کہ دونوں ملک جوہری ہتھیار استعمال کرنا نہیں چاہتے ، کیونکہ اس کا مطلب ہے یقینی طور پر ایک دوسرے کی تباہی ۔ لیکن انہوں نے یہ کہا کہ دونوں ممالک کی عمومی فوجی طاقت میں غیر معمولی فرق کی وجہ سے پاکستان اپنے اس عزم پر کہ وہ پہلے جوہری ہتھیار استعمال نہیں کرے گا پر کاربند نہیں رہ سکتا۔ انہوں نے کہا کہ تنازعے کا حل لازمی تھا۔ایک سوال کے جواب میں سینیٹر جاوید جبار نے کہا، ہندوتوا کا وائرس بھارتی نظام کے مختلف حصوں میں سر ایت کر گیا ہے اور اس کے نتائج خوفناک ہوسکتے ہیں۔ایک اور سوال کے جواب میں، انہوں نے کہا کہ موجودہ صورتِ حال میں، پاکستان نے اپنی حقیقی بات پوری دنیا میں نہیں بتا کر، بہت بڑی غلطی کی ہے، اور اس بات کا کوئی جواز نہ تھا۔ انہوں نے امید ظا ہر کی کہ سول اور فوجی قیادت آئندہ اس بات کا خیال رکھے گی۔ اس سے پہلے، سوسائٹی برائے گلوبل ماڈریشن(SGM) کے چیئرمین سیّدجاوید اقبال نے سامعین سے جاوید جبار کا تعارف کراتے ہوئے کہا کہ، جاوید جبار ایک ہمہ جہت شخصیت ہیں۔ وہ ایک معروف مصنف، ایک بہترین ایڈورٹائزنگ شخصیت، سیاست دان، ماس کمیونیکیشن کے ماہر، براڈکاسٹر اور دانشور اور تین مواقع پر وفاقی کابینہ کے رکن رہ چکے ہیں۔سوسائٹی برائے گلوبل ماڈریشن نے پہلے بھی مختلف موضوعات پر گفتگو کی تقریبات کا انعقاد کیا ہے ، جن سے سیکرٹری خارجہ نجم الدین شیخ، سینیٹ کے سابق صدر سینیٹر رضا ربانی اور وائس چانسلر برائے ملیر یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ،ڈاکٹر مہتاب کریم نے خطاب کیا تھا۔

مزید : کراچی صفحہ اول