فواد چوہدری کی نوازشریف کو پلی بارگین کی آفر

فواد چوہدری کی نوازشریف کو پلی بارگین کی آفر
فواد چوہدری کی نوازشریف کو پلی بارگین کی آفر

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن) وزیراطلاعات و نشریات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ میں نے پلی بارگین کی آفر بھی دی ہے نواز شریف نیب کو درخواست کریں۔

وزیراطلاعات و نشریات فوادچوہدری نے لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ نوازشریف اور ان کا خاندان علاج کیلئے لندن جانا چاہتا ہے جہاں پہلے علاج ہواتھا۔

بورڈ کی سفارش کے مطابق سابق وزیراعظم کو سروسزہسپتال منتقل کیا گیا تھا۔ نواز شریف کی شوگر زیادہ تھی اور گردے کا بھی مسئلہ تھا، ان کا مسئلہ شوگر اور ہائیپر ٹینشن تھا۔انہوں نے کہا کہ 16 جنوری کو جیل اتھارٹیز نے پنجاب حکومت کو درخواست کی نواز شریف کی طبعیت ٹھیک نہیں۔

ہم 17 جنوری سے سابق وزیراعظم کو انجیوگرافی کا کہہ رہے لیکن وہ پاکستان میں علاج نہیں کرانا چاہتے اور انجیوگرافی کرانے سے انکار کیا۔ 22 جنوری کو نواز شریف کو پی آئی سی میں چیک کیا گیا اور ٹیسٹ کئے گئے، 25 جنوری کو محکمہ داخلہ کی سفارش پر چھ رکنی بورڈ بنایا گیا، 30 جنوری کو بورڈ نے نواز شریف سے جیل میں بات کی اور اسپتال منتقل کرنے کی سفارش کی۔

فواد چوہدری نے بتایا کہ میں پنجاب حکومت سے بھی نالاں ہوں کہ انہوں نے جیل قوانین سے ہٹ کر سہولیات دیں، نواز شریف اور شہباز شریف نے جتنے ہسپتال بنائے انہیں وہ پسند نہیں ہیں،عمران خان کو جب الیکشن مہم میں چوٹ لگی تو وہ باہر علاج کے لئے جا سکتے تھے لیکن انہوں نے کہا کہ علاج ملک میں ہی کروانا ہے اور عمران خان نے اپنے والد کا علاج بھی شوکت خانم سے کرایا۔

جیل میں سپیشل کارڈک یونٹ بنا دیا ہے لیکن نواز شریف نے ایک بار بھی ڈاکٹروں کو بات کرنے کی اجازت نہیں دی۔نواز شریف اگر باہر جانا چاہتے ہیں اور چاہتے ہیں کہ صحت کے بہانے احتساب کا عمل روک جائے تو ایسا نہیں ہو گا پاکستان کے عوام کا پیسہ وآپس لائیں گے، کوئی مقدمہ ہمارا بنایا نہیں، ججز ہمارے لگائے نہیں کوئی تفتیش۔وزیراطلاعات نے کہا کہ سیاست سیاست کھیلنی ہے تو وہ مسلم لیگ نواز کی اپنی مرضی ہے، ہم میڈیا کے ہاتھوں نواز شریف کے معاملے پر بلیک میل ہو رہے ہیں، میڈیا کہتا ہے نواز شریف کو علاج نہیں مل رہا۔

وزیرصحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ زندگی کا بھروسہ نہیں ہے، ہم نوازشریف کا بہت خیال رکھیں گے لیکن اگر خدانخواستہ کچھ ہوگیا تو کوئی کسی کی زندگی کی ذمہ داری نہیں لے سکتا۔

مزید : اہم خبریں /قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور