کرپٹ نظام کیخلاف جدوجہد کا اعلان ، مینڈیٹ مسترد، عالمی طاقتوں نے افغانستان سے محفوظ انخلاءکیلئے طالبان دوست پارٹی کامیاب کرائی : طاہرالقادری

کرپٹ نظام کیخلاف جدوجہد کا اعلان ، مینڈیٹ مسترد، عالمی طاقتوں نے افغانستان ...
کرپٹ نظام کیخلاف جدوجہد کا اعلان ، مینڈیٹ مسترد، عالمی طاقتوں نے افغانستان سے محفوظ انخلاءکیلئے طالبان دوست پارٹی کامیاب کرائی : طاہرالقادری

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹرطاہر القادری نے کرپٹ نظام حکومت کو اکھاڑ پھینکنے کے لیے آئینی، قانونی اور جمہوری طریقے سے جدوجہد کرنیکا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم موجودہ انتخابی نظام اور مینڈیٹ کو مسترد کرتے ہیں ، تبدیلی کا نعرہ لگانے والوں نے 146لوٹوں کو ٹکٹ دی ،عالمی طاقتوں نے افغانستان سے انخلاءکیلئے طالبان دوست پارٹی کو انتخابات میں کامیاب کرایا۔ اپنے دفتر میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے طاہرالقادری نے کہا کہ میں قوم کو بتانا چاہتا ہوں کہ عالمی طاقتوں نے افغانستان سے امریکہ کو انخلا کا محفوظ راستہ دینے کے لیے ملک میں طالبان دوست پارٹی کو کامیاب کرایا اور اب ملک میں طالبان دوست حکومت کا قیام عمل میں لایاگیا ، امریکہ چاہتا ہے کہ وہ 2014ء میں افغانستان سے نکلے تو اس پر دہشت گردوں کے حملے نہ ہوں اور شاید طالبان دوست حکومت آنے سے اس کا یہ مسئلہ بھی حل ہو چکا ہے اور اس کے بعد پارلیمنٹ ،حکومت اور طالبان جانیں ،امریکہ تو چلا جائے گا۔اُنہوں نے کہا کہ اس منصوبہ بندی کے تحت اب پرویز مشرف کو بھی محفوظ راستہ مل جائے گا، جوڈیشل پالیسی 2009 ءکے تحت کسی بھی ریٹائرڈ جج کو کنٹریکٹ پر دوبارہ ملازمت نہیں دی جا سکتی لیکن اب اس پالیسی کی کھلی خلاف ورزی کرتے ہوئے ”شرائط “کے تحت ایک سال کے لیے ریٹائرڈ جج کو کنٹریکٹ پر بھرتی کرکے اُنہیں الیکشن ٹریبونل کا سربراہ بنایا گیا ہے جس کی وجہ سے وہ سمجھتے ہیں کہ اس ٹریبونل سے بھی کسی کو کوئی انصاف نہیں ملے گا اور دھاندلی کے خلاف احتجاج کرنے والے صرف احتجاج کرتے رہیں گے۔ان کاکہناتھا کہ پہلے ہی کہہ دیا تھا کہ اس انتخابی نظام سے ملک میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی اور آج ثابت ہو چکا ہے کہ انتخابات سے ملک میں کوئی تبدیلی نہیں آئی بلکہ ہر جماعت مرکز یا صوبے میں حکومت کا حصہ رہے گی۔ انھوں نے کہا کہ ملک میں عدل وانصاف، آئین اور قانون کی دھجیاں ا±ڑائی گئی ہیں اور کسی بھی امیدوار نے الیکشن کمیشن کے قواعد وضوابط کے مطابق 10اور 15لاکھ تک اخراجات نہیں کیے ،اس لیے یہ تمام اراکین نااہل ہوتے ہیںاور اگر ملک میں آئین اور قانون موجود ہے تو تمام امیدواروں کو نااہل قرار دیا جائے۔

مزید :

الیکشن ۲۰۱۳ -