حوثی جنگجوﺅں سے معاہدہ نہیں ہوا:یمنی حکومت

حوثی جنگجوﺅں سے معاہدہ نہیں ہوا:یمنی حکومت
حوثی جنگجوﺅں سے معاہدہ نہیں ہوا:یمنی حکومت

  

جدہ (محمد اکرم اسد/ بیورو چیف) یمنی حکومت نے ایک وضاحتی بیان میں اعلامیہ جاری کیا ہے کہ کویت میں حوثی جنگجوﺅںکے ساتھ مذاکرات میں حکومتی وفد کے ساتھ کوئی معاہدہ نہیں ہوا۔ اعلامیہ کے مطابق مذاکرات ابھی کسی نتیجے پر نہیں پہنچے۔ اس کی وجہ حوثی وفد کی ہٹ دھرمی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس بات میں کوئی صداقت نہیں ہے کہ حکومتی وفد اور حوثی باغیوں کے درمیان مخلوط حکومت کا معاہدہ ہوا ہے۔ یہ بے بنیاد خبر حوثی باغیوں کی طرف سے پھیلائی جارہی ہے۔ حوثی اپنے غیر قانونی انقلاب کو جائز قرار دینا چاہتے ہیں۔ وہ ملک میں آئین اور دستور کر ماننے کے لئے تیار نہیں ہیں۔ ادھر اقوام متحدہ کے خصوصی نمائندے اسماعیل ولد الشیخ احمد نے کہا کہ جاری مذاکرات ایک تاریخی موقع ہے۔ یہ دوبارہ نہیں مل سکتا۔ فریقین کو چاہیے کہ وہ یمن کے امن و استحکام کو مدنظر رکھیں۔ یمنی عوام کو تب مذاکرات کی ناکامی کے متحمل نہیں ہوسکتے۔ اقوام متحدہ کی کوششوں سے رمضان سے پہلے 50 فیصد قیدیوں کی رہائی ممکن ہوگی۔ اس کے علاوہ یمنی حکومت نے جمعرات اور جمعہ کے علاوہ ”قات“ کی فروخت پر پابندی عائد کردی ہے۔ حکومتی ادارے نے اعلامیہ میں کہا کہ جمعرات اور جمعہ کے علاوہ قات کی خرید و فروخت اور نقل و حمل پر بھی پابندی ہوگی۔

مزید :

عرب دنیا -