عمران خان کے 2003تا ابتک آف شور کمپنی کے کتنے مالیت کے اکاؤنٹس تھے،فیصل میر

عمران خان کے 2003تا ابتک آف شور کمپنی کے کتنے مالیت کے اکاؤنٹس تھے،فیصل میر

لاہور(نمائندہ خصوصی ) پاکستان پیپلز پارٹی لاہور کے سابق سیکرٹری اطلاعات فیصل میر نے کہا ہے کہ عمران خان قوم کو بتائیں کہ سال 2003سے لیکر سال2015تک ان کی آف شور کمپنی کے کتنے مالیت کے اکاؤنٹس تھے اس کمپنی کو بنانے کے لئے ان کے ذرائع آمدن کیا تھے اور ان کی کمپنی نے فروخت سے پہلے کتنے مالیت کا کاروبار کیا تھا اس کاروبار کے اکاؤنٹس کی تفصیلات کے بارے میں بھی بتایا جائے عمران خان کی جانب سے آف شور کمپنی بنانے کے اعتراف کے بعد اس بات کا خدشہ ہے کہ انہوں نے یہ کمپنی شوکت خانم کے نام سے اکھٹے کئے گئے چندے کی رقم سے بنائی تھی اس لئے ان کو چندہ اور عطیات دینے والے حضرات سچ جاننا چاہتے ہیں جب تک عمران خان ان کو سچ نہیں بتائیں گے تب تک یہی سمجھا جائے گا کہ انہوں نے شوکت خانم ہسپتال کے لئے اکھٹی کی گئی رقم سے آف شور کمپنی بنائی تھی ۔فیصل میر کا کہنا تھا کہ عمران خان کی سیاست کی طرح ان کی پوری زندگی بھی تضادات سے بھری پڑی ہے دوسروں کو نصیحت کرنے والے عمران خان خود میاں فصحیت نکلے۔

اور پاکستانیوں میں سے سب سے پہلے آف شور کمپنی بنانے والے بھی نکلے عمران خان نے قوم بالخصوص انہیں چندہ دینے والوں کے اعتماد کو ٹھیس پہنچائی ہے اس پر وہ قوم سے بھی معافی مانگیں اور چندہ دینے والوں سے بھی معافی مانگیں وگرنہ قوم اور تاریخ انہیں کبھی بھی معاف نہیں کرے گی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4