ایس پی کینٹ نے پی پی 155سے تحریک انصاف کے نائب صدر ہارون مسیح کے والد یعقوب مسیح کو عدالت میں پیش کردیا

ایس پی کینٹ نے پی پی 155سے تحریک انصاف کے نائب صدر ہارون مسیح کے والد یعقوب ...

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ کی ہدایت پر ایس پی کینٹ نے پی پی 155سے تحریک انصاف کے نائب صدر ہارون مسیح کے والد یعقوب مسیح کو عدالت میں پیش کردیا ۔ہارون مسیح کی درخواست پر فاضل جج نے اس کے والد یعقوب مسیح کو پیش کرنے کا حکم دیا تھا جس میں الزام لگایا گیا تھا کہ مسلم لیگ (ن) کے مقامی راہنماؤں کی ایماء پر پولیس نے اڑھائی ماہ سے اس کے والد کو ناجائز تحویل میں رکھاہوا ہے اور انہیں ہراساں کیا جارہا ہے ۔فاضل جج نے یعقوب مسیح کو آزاد کرتے ہوئے پولیس کو ہدایت کی ہے کہ متاثرہ خاندان کو ناجائز طور پر ہراساں نہ کیا جائے ۔ درخواست گزار کی طرف سے شبیر بخاری ایڈووکیٹ پیش ہوئے، ایس پی کینٹ عبادت نثار نے بزرگ مسیحی شہری یعقوب مسیح کو عدالت میں پیش کیا، جس نے عدالت کو بتایا کہ جنوبی چھاؤنی پولیس اور سی آئی اے غازی آباد نے بھٹہ چوک کے مقامی لیگی رہنماؤں وقار حسین، عمر بٹالوی اور اشرف مسیح کے ساتھ گٹھ جوڑ کر کے اسے اغواء کیا اور تشدد کا نشانہ بنایا، دوران حراست اسے پیشاب پینے پر مجبور کیا گیا اور منہ پر جوتے مارے گئے، یہ لوگ اس سے مکان کے کاغذات اور 71 لاکھ روپے تاوان کا مطالبہ کرتے تھے، درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ یعقوب مسیح کے اغواء کا مقدمہ درج ہے جس میں ملزم وقار حسین اور عمر بٹالوی گرفتار ہیں، ایس پی کینٹ عبادت نثار لیگی کی پشت پناہی کے باعث تیسرے مرکزی ملزم اشرف مسیح کی گرفتاری نہیں ڈالی جا رہی اور سے جنوبی چھاؤنی پولیس اسٹیشن میں پروٹوکول دیا جا رہا ہے، ایس پی کینٹ نے کہا کہ ان پر بے بنیاد الزامات عائد کئے جا رہے ہیں، عدالت نے دلائل سننے کے بعد یعقوب مسیح کو رہا کرنے کا حکم دیا اور سی سی پی او لاہور کو ہدایت کی کہ متاثرہ خاندان کو ناجائز ہراساں نہ کیا جائے، عدالتی کارروائی کے بعد ہارون مسیح نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کے خاندان کو مسلم لیگ (ن)چھوڑکر تحریک انصاف میں جانے کی سزا دی جا رہی ہے۔

مزید : علاقائی