لاہور ہائیکورٹ نے حکومت کو زرعی انکم ٹیکس کی وصولی سے روک دیا

لاہور ہائیکورٹ نے حکومت کو زرعی انکم ٹیکس کی وصولی سے روک دیا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)لاہورہائیکورٹ نے حکومت کوزرعی انکم ٹیکس کی وصولی سے روک دیا ہے ۔جسٹس عائشہ اے ملک نے یہ عبوری حکم امتناعی پنجاب کے مختلف زمینداروں کی طرف سے دائر متعدد درخواستوں پر جاری کیا ۔فاضل جج نے حکومت سے دو ہفتوں میں جواب بھی طلب کرلیا ہے ۔درخواست گزاروں کی طرف سے موقف اختیار کیا گیاکہ حکومت نے آرڈیننس کے ذریعے کسانوں پہ بلاجواز زرعی انکم ٹیکس عائد کر رکھا ہے،حکومت نے ٹیکس کے نفاذ سے قبل اسمبلی سے منظوری نہیں لی،درخواست گزاروں کے وکیلوں نے مزید موقف اختیار کیا گیاکہ آئین میں زرعی آمدنی کو ٹیکس سے مستثنیٰ قرار دیا گیا ہے ،اس کے باوجود کسانوں سے ٹیکس وصول کیا جارہا ہے ،کسان کھادوں اور مختلف زرعی آلات پر پہلے ہی ٹیکس ادا کر رہے ہیں جبکہ حکومت نے زرعی ترقی کے لئے کبھی بھی عملی اقدامات نہیں کئے جس کی وجہ سے کسانوں کو دوہری مشکلات کا سامنا ہے،انہوں نے عدالت سے استدعا کی کہ حکومت کی جانب سے کسانوں پر عائد کئے گئے زرعی ٹیکس کے نفاذ کوآئین سے متصادم قرار دے کر کالعدم کیا جائے ۔ عدالت نے درخواست گزاروں کی طرف سے دائر عبوری حکم امتناعی کی متفرق درخواستیں منظور کرتے ہوئے حکومت کو زرعی انکم ٹیکس کی وصولی سے روک دیا ہے جبکہ حکومت کو دو ہفتے کے اندر اس درخواست پر جواب داخل کرنے کی ہدایت کی ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -