نوشہرہ ، تحصیل کونسل جہانگیر ہ کا فنڈز کٹوتی کیخلاف برداشت احتجاجی مظاہرہ

نوشہرہ ، تحصیل کونسل جہانگیر ہ کا فنڈز کٹوتی کیخلاف برداشت احتجاجی مظاہرہ

 نوشہرہ(بیورورپورٹ)تحصیل کونسل جہانگیرہ کے ویلج کونسلز ناظمین اور کونسلران کا ترقیاتی فنڈز میں 75فیصد کٹوتی کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ صوبائی حکومت 75فیصد کٹوتی کا فیصلہ واپس لے بصورت دیگر اپنے عہدیدوں سے مستعفی ہونے کی دھمکی اگر ایک ہفتے کے اندراندر فیصلہ واپس نہ لے لیاگیا تو پھر صوبہ بھر میں احتجاجی تحریک شروع کریں گے اس سلسلے میں تحصیل کونسل جہانگیرہ کے تمام ویلج کونسلوں کے ناظمین، نائب ناظمین، یوتھ کونسلرز اور اقلیتی کونسلروں نے شاعرالرحمن، انیب ساجد ، اورنگزیب، شاہدخان کی قیادت میں نوشہرہ کینٹ میں پریس کلب کے سامنے زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا مظاہرین نے بینرز اور پلے کارڈ اٹھارکھے تھے جس پر ترقیاتی فنڈ میں 75فیصد کٹوتی کے خلاف احتجاجی نعرے درج تھے بعدازاں نوشہرہ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت نے 2015کے بلدیاتی انتخابات سے قبل صوبے میں بلدیاتی نظام کی تشہیر کرکے کہا تھا کہ اختیارات کو نچلی سطح پر منتقل کررہے ہیں جس سے مقامی سطح پر منتخب مقامی نمائندگان عوام کے مسائل حل کریں گے اور صوبے کو سوشل اکنامکس پروگرام کے تحت نچلی طبقے کے معاشی مسائل کو ویلج کونسل کے ذریعے حل کیاجائے گا اور ویلج کونسل کو خود مختار بنانے کے سنہرے خواب دکھائے گئے تھے لیکن صوبائی حکومت بدقسمتی سے موجودہ بلدیاتی نظام کو مقامی ایم پی ایز کے گھروں کی لونڈی بنانے پر تلی ہوئی ہے ایک سال گزرنے کے باوجود منتخب بلدیاتی نمائندے بے اختیار بیٹھے ہوئے ہیں ہمارے پاس کوئی اختیار نہیں فنڈز تو فراہم کیاگیا تھا لیکن اب بعد میں فنڈز کا 75فیصد حصہ کاٹ دیاگیا بچاکچا 25فیصد فنڈز پر ہم عوامی مسائل بہتر انداز میں حل نہیں کرسکتے انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت حسب وعدہ 30لاکھ روپے ترقیاتی فنڈز کی مدمیں ہر ویلج کونسل کو جاری کریں تاکہ بلدیاتی نمائندے اپنی مرضی کے مطابق فنڈز کا استعمال کریں انہوں نے مزید کہا کہ فنڈز کے استعمال کو اڈٹ کے اصولوں اور اڈٹ کے چیک اینڈ بیلنس کے اصول کے تحت ایل سی بی طرز پر ترقیاتی منصوبوں کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے اختیارات دئیے جائیں تاکہ کم خرچ پر اعلیٰ معیار قائم کرتے ہوئے زیادہ سے زیادہ منصوبے مکمل ہوسکے اور عوام پر بلدیاتی اداروں اور بلدیاتی نمائندوں کی افادیت اور قابلیت عیاں ہوسکیں۔

مزید : پشاورصفحہ آخر