تعلیم ہی پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت کا میگا پراجیکٹ ہے،امتیاز شاہد

تعلیم ہی پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت کا میگا پراجیکٹ ہے،امتیاز شاہد

  

کوہاٹ (بیورورپورٹ) خیبر پختونخواکے وزیر قانون و پارلیمانی امورامتیاز شاہد قریشی نے کہا ہے کہ قوموں کے عروج و زوال کا دارومدار تعلیم پر ہے جو قومیں تعلیم میں پیچھے رہ جاتی ہیں ان کے مٹنے میں دیر نہیں لگتی یہی وجہ ہے کہ پی ٹی آئی کی صوبائی حکومت کی توجہ بڑی بڑی سڑکوں اور عمارتوں کی تعمیر کی بجائے تعلیم پر ہے اور تعلیم ہی موجودہ حکومت کا میگا پراجیکٹ ہے۔ملک کی تاریخ میں پہلی بار حکومت خیبر پختونخوا نے بجٹ کا 29فیصد تعلیم کے لئے مختص کیا ہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی کے 39کوہاٹ کے سماری یونین کونسل میں گورنمنٹ گرلز مڈل سکول کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیاجسے 1کروڑ31لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر کیا جائے گا۔انہوں نے اس موقع پر سماری یونین کونسل میں بوائزہائر سیکنڈری سکول، بنیادی مرکز صحت ،سماری بالا میں گرلز پرائمری سکول اور چیچنہ پل کے لئے 50لاکھ روپے کا بھی اعلان کیا۔تقریب سے دوسروں کے علاوہ مقامی ناظم وزیربادشاہ اور میاں مجاہد نے بھی خطاب کیا اور علاقے کے مسائل ومشکلات کی نشاندہی کی جبکہ اس موقع پر تحصیل ناظم لاچی اشفاق قریشی اور عمائدین علاقہ کی کثیر تعداد بھی موجود تھی۔وزیر قانون نے کہا کہ گزشتہ 65سالوں کے دوران پی ٹی آئی سے پہلے اس حلقے میں تمام پارٹیاں برسر اقتدار رہی ہیں لیکن منتخب ہونے کے بعدکسی نے اس پسماندہ حلقے کی جانب موڑ کر بھی نہیں دیکھا اور آج تیل و گیس سے مالا مال اس حلقے کی یہ ناگفتہ بہ حالت دیکھ کر دل خون کے آنسو روتاہے تاہم انہوں نے کہا کہ سماری یونین کونسل کے لئے ایک بڑا پیکیج زیر غور ہے جس سے علاقے کی پسماندگی دور ہونے میں کافی مدد ملے گی۔ان کا کہنا تھا کہ اب یہاں پی ٹی آئی کے علاوہ کسی پارٹی کے لئے کوئی جگہ نہیں اور انشاء اللہ آئندہ الیکشن انتخابی مہم چلائے بغیر اپنی کارکردگی کی بنیاد پر جیت کر دکھاؤں گا۔انہوں نے کہا کہ پی کے 39کے گیس سے محروم علاقوں کے لئے 20کروڑ روپے رکھے گئے ہیں اور آئندہ سال اس سے بھی زیادہ مزید رقم رکھیں گے اور ہماری بھر پور کوشش ہوگی کہ اپنی آئینی مدت پوری ہونے تک پورے حلقے کو گیس پہنچاؤں۔امتیاز قریشی نے عوام سے کہا کہ وہ اپنے درمیان معمولی معمولی اختلافات اوررنجشیں بھلا کر علاقے کے وسیع تر مفاد میں متحد ہو جائیں اور ترقیاتی کاموں کو اپنی انا ء کی نذر نہ کریں کیونکہ علاقے کی ترقی و خوشحالی اتفاق و اتحاد ہی میں مضمر ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -