وزیر خوراک گندم خریدادی کے طے شدہ اہداف کا حصول ہر ممکن یقینی بنانے کی ہدایت

وزیر خوراک گندم خریدادی کے طے شدہ اہداف کا حصول ہر ممکن یقینی بنانے کی ہدایت

 پشاور( پاکستان نیوز)خیبر پختونخوا کے وزیر خوراک حاجی قلندر خان لودھی نے کہا ہے کہ محکمہ خوراک گندم کی خریداری کے مقررہ اہداف کے حصول میں ممکنہ تمام احتیاطی تدابیر بروئے کار لائے تاکہ صاف ستھری بہترین اعلیٰ معیار کی گندم خرید کی جا سکے تاہم انہوں نے متعلقہ عملے کو خصوصی ہدایت جاری کیں کہ وہ خریداری مراکز تک گندم لانے والے کاشتکاروں کو ضروری سہولیات بھی فراہم کریں جس سے نہ صرف آپ کو ذہنی و قلبی اطمینان اور سکون نصیب ہو گا بلکہ شفافیت اور ایمانداری کو اپنا کر آپ اللہ تعالیٰ کے حضور بھی سرخروئی کے حقدارٹھہرائے جاسکتے ہیں۔انہوں نے یہ باتیں پیر کے روز اپنے دفتر سول سیکرٹریٹ پشاور میں گندم خریداری برائے سال 2016کے ضمن میں منعقدہ محکمہ خوراک کے ورکنگ گروپ اور کو آرڈینیشن کمیٹی کے ایک مشترکہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔اجلاس میں رکن صوبائی اسمبلی زرین ریاض،سیکرٹری خوراک عصمت اللہ خان گنڈا پور، ڈائریکٹر محکمہ خوراک محمد انور ،سابقہ چیئرمین فلور ملز ایسوسی ایشن محمد نعیم بٹ اور محکمہ خوراک ،محکمہ خزانہ،محکمہ زراعت اور قانون سمیت دیگر متعلقہ محکموں کے افسران نے شرکت کی۔اجلاس میں گندم خریداری برائے سال 2016سے متعلق اہم معاملات پر تفصیلی تبادلہ خیالات کیا گیا اور اس بارے میں بعض اہم تجاویز بھی پیش کی گئیں اور زیادہ سے زیادہ گندم کی خریداری کو یقینی بنانے کے سلسلے میں بعض اہم فیصلے کئے گئے۔اجلاس میں بار دانہ،ود ہولڈنگ ٹیکس،کسانوں کے بیان حلفی سمیت دیگر معاملات کو بھی زیر بحث لایا گیا۔اجلاس کو بتایا گیا کہ وڈ ہولڈنگ ٹیکس کا گندم کی خریداری پر کسی دوسرے صوبے میں کوئی نفاذ نہیں لہذا اس معاملے کو پہلے ہی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے سپرد کیا جا چکا ہے جس پر عنقریب کمیٹی کی رائے منظر عام پر آ جائے گی۔اجلاس میں فلور ملوں کو گندم کی فراہمی کے علاوہ بعض دیگر معاملات بھی زیر غور لائے گئے اور ان کے حل کے لئے مشترکہ لائحہ عمل اختیار کرنے کی ضرورت پر زور دیا گیا۔قبل ازیں سیکرٹری خوراک عصمت اللہ خان گنڈا پور نے اجلاس کو امسال گندم کی 3.5ملین ٹن خریداری کے ٹارگٹ کو حاصل کرنے کے لئے حکومت کی جانب سے طے شدہ طریقہ کار کے بارے میں تفصیلاً بریفنگ دی اور بتایاکہ گندم کی خریداری کیلئے بنکوں سے قرض لینے کی بجائے محکمہ خوراک اپنے مالی وسائل کواستعمال میں لائے گا انہوں نے گزشتہ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کی بھی تفصیلات پیش کیں اورمتعلقہ ضلعی افسران کو گندم کی خریداری میں شفاف طریقہ کاراختیار کرنے کی ہدایت کی۔

مزید : پشاورصفحہ آخر