آل پنشنرز ایسویسی ایشن کا مہنگائی کے تناسب سے پنشن میں اضافہ کا مطالبہ

آل پنشنرز ایسویسی ایشن کا مہنگائی کے تناسب سے پنشن میں اضافہ کا مطالبہ

مردان ( بیورورپورٹ ) آل پنشنر ز ایسوسی ایشن کے ڈویژنل صدرفضل اکبر ہوتی نے کہاہے کہ مہنگائی کی مناسبت سے پنشن میں اضافے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہے سابقہ سرکاری ملازمین نے اپنی تمام تر زندگی ملک وقوم کی خدمت میں صرف کی ہے لیکن اب ان کے آخری عمر میں کوئی پرسان حال نہیں انہوں نے کہاکہ پرانے پنشنرز جو 30نومبر2001ء میں ریٹائرڈ ہوچکے ہیں کی پنشن نہ ہونے کی برابرہے ان کے پنشنروں میں دوسو فیصد اضافے کے ساتھ ساتھ ادائیگی نٹ کی بجائے گراس پر دی جائے یہاں جاری کردہ ایک بیان میں آل پنشنرز ایسوسی ایشن کے صدرنے کہاکہ بنولنٹ فنڈ تمام سرکاری ملازمین سے گاٹی گئی ہے اس فنڈ سے 2010ء سے پنشن یافتہ افراد کو امداد دی گئی ہے لیکن اس سے پہلے ریٹائرڈ ہونے والے ملازمین محروم ہیں اس لئے بنولنٹ فنڈ سے بلاتفریق تمام ریٹائرڈ ملازمین کو مستفید ہونے کا موقع دیاجائے ایسوسی ایشن کے صدر نے کہاکہ ریٹائر ہوتے وقت ملازمین کو آدھی پنشن کمیوڈ کی جاتی ہے اور آدھی پنشن کی ادائیگی کی جاتی ہے جس کے لئے عمر 75سال ہے لہذا عمر کی حدکو کم کرکے 70سال مقررکیاجائے اورساتھ ہی تمام بقایاجات کی ادائیگیاں کی جائیں فضل اکبر ہوتی نے کہاکہ انشورنش کی رقم تمام سرکاری ملازمین سے گاٹی گئی جاتی ہے بعض ملازمین کو اس کی ادائیگی کی جاتی ہے جبکہ زیادہ تر پنشنرز انشورنشن کی اس حق سے محروم ہے حکومت فوری کاروائی کرتے ہوئے سابقہ ملازمین ان کا حق دینے کے احکاما ت جاری کریں اس طرح پنشنروں کو میڈیکل کے مد میں تین سال قبل کل پنشن کا 25فیصد مقررکیاگیاہے حالانکہ ادویات اور علاج ومعالجے کی قیمتوں میں ہزار گنااضافہ ہوگیاہے انہوں نے حکومت نے مطالبہ کیا کہ اس فیصلے پر نظر ثانی کرکے مہنگائی کے تناسب سے میڈیکل دیاجائے۔

مزید : پشاورصفحہ آخر