حکومتی دعوے دھرے کے دھرے، جنوبی پنجاب میں بجلی کا شارٹ فال بڑھنے لگا

حکومتی دعوے دھرے کے دھرے، جنوبی پنجاب میں بجلی کا شارٹ فال بڑھنے لگا

ملتان، وہاڑی، میلسی، ٹھٹھہ صادق آباد، ہیڈ راجکاں، دھنوٹ، جیٹھ بھٹہ، راجن پور، ڈہرکی، ڈیرہ غازیخان (نمائندہ پاکستان، نمائندگان) جنوبی پنجاب میں بجلی کا شارٖٹ فال بڑھنے لگا جنوبی پنجاب سمیت ملک بھر میں بجلی کا شارٹ فال بڑھنا شروع ہوگیا ،حکومتی دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے گزشتہ روز وزیر اعظم نواز شریف کی قومی اسمبلی(بقیہ نمبر51صفحہ12پر )

سے خطاب کے دوران بھی ملک بھر میں بجلی کی آنکھ مچولی جاری رہے،صارفین نے مطالبہ کیا ہے کہ سخت گرمی کی اذیت سے بچنے کے لیے انہیں بجلی کی بلا تعطل فراہمی ممکن بنائی جائے۔وہاڑی سے بیورو رپورٹ، نا مہ نگار کے مطابق بجلی کی بے تحاشا لوڈشیڈنگ کی وجہ سے عوام ذلیل وخوار ہونے لگے ، مریض ، بچے ، بوڑھے اور خواتین انتہائی پریشان ہیں تاجروں کے کا روبار بری طرح ٹھپ ہو کر رہ گئے جس کی وجہ سے مزدور دیہاڑی دارطبقہ مالی طورپر دن بدن کمزور ہونے لگا جس پر مزدور اور دیہاڑی دار طبقہ اخلاق احمد ، قیصر علی ، آفتاب احمد، قاسم علی ، مقصواحمد ، عبدالرزاق ، شکیل احمدودیگرنے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ بجلی کی طویل غیراعلانیہ لوڈشیڈنگ کا سلسلہ شروع ہے جس سے صارفین ذلیل وخوار ہورہے ہیں ۔میلسی سے تحصیل رپورٹر کے مطابق میلسی اور گردونواح میں بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ 12سے 14گھنٹے تک پہنچ گیا، گرمی کی شدت میں بھی اضا فہ، درجہ حرارت 40ڈگری سنٹی گریڈ تک پہنچ گیا۔ شہر میں آس فیکٹری مالکان کی ملی بھگت سے برف کی بلیک میں فروخت جاری رہی۔ ہیضے کی وباء سے درجنوں افراد متاثر ہ ہو کر کئی ہسپتالوں میں زیر علاج ہیں۔ غیر اعلانیہ لو ڈشیڈنگ سے بجلی سے وابستہ کاروبار بند ہو کر رہ گئے۔ٹھٹھہ صادق آباد سے نمائندہ پاکستان کے مطابق دیگر علاقوں کی طرح ٹھٹھہ صادق آباد ونواح میں گرمی شدت میں اضافہ کے ساتھ ہی واپٖڈاسکینڈ جہانیاں کی طرف سے بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ میں اضافہ کردیاگیا ہے،جبکہ روزانہ 14سے 16گھنٹوں کی غیر اعلانیہ بجلی لوڈشیڈنگ سے عوام شدید پریشان ہیں۔ہیڈراجکاں سے نمائندہ پاکستان کے مطابق ہیڈراجکاں اور نواحی علاقوں میں گرمی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی بجلی کی لوڈ شیڈنگ میں بھی اضافہ ہو گیا ۔ میپکو کے اعلان کے مطابق شہری علاقوں میں لوڈ شیڈنگ چھ گھنٹے اور دیہی علاقوں میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ8گھنٹے ہے مگر بد قسمتی سے شہری علاقوں کی لوڈ شیڈنگ بھی دیہی علاقوں میں ڈال دی گئی ہے اور یہاں دورانیہ چودہ گھنٹے سے بھی تجاوز ہو گیا ہے ۔ اور آئے روز لوڈ شیڈنگ میں مزید اضافہ ہو رہا ہے ۔ اہل علاقہ سراپا احتجاج ہیں اور خود ساختہ لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کا مطالبہ کیا ہے ۔دھنوٹ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق اہلیان دھنوٹساجد اقبال قریشی،ڈاکٹر محمد صادق ہانس ،ملک محمد شاہد،محمد راشد عباسی،ڈاکٹر صادق پرویز،سید عباس شاہ،سید شوکت شاہ ،سید یاسین بخاری نے پریس کلب دھنوٹ کے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ شدید گرمی کے باعث غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نے عوام کا جینا محال کر دیاہے،سورج آگ برسا رہاہے،درجہ حرارت 40ڈگری سینٹی گریڈ سے تجاوز کر گیا ہے،انسان ،جانور پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں،مساجد میں وضو کے لیے پانی نایاب ہو گیا ،فصلیں تباہ ہو رہی ہیں،پنجاب حکومت کے جھوٹے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے ،اہلیان نے دھنوٹ نے میپکو چیف،ڈی سی او لودہراں اور ایس ڈی او لودہراں سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔جیٹھہ بھٹہ سے نامہ نگار کے مطابق بجلی کی حالیہ لوڈشیڈنگ اور بے رحم بجلی نے عوام کے چیخیں نکلوادیں،دھریجہ نگر سمیت ارد گرد کے علاقوں میں خود ساختہ لوڈشیڈنگ نے عوام کیلئے مشکلات بڑھادی ہیں۔مکینوں نے واپڈا کے اعلیٰ حکام سے واپڈا سب ڈویژن کوٹسمابہ کے اہلکاروں کے خلاف فوری کارروائی اور لوڈشیڈنگ ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔راجن پور سے ڈسٹرکٹ رپورٹر کے مطابق راجن پور میں وقفہ وقفہ سے غیراعلانیہ لوڈ شیڈ نگ کے ساتھ ساتھ مسلسل دس گھنٹے بجلی کی بندش پر شہریوں کاصبر کا پیما نہ لبریز ہوگیا ایکسئین واپڈا راجیش کمار کے خلاف احتجاج ایکسئین واپڈا جان بوجھ کر راجن پور شہر کی سپلائی پر ڈی سیٹ لگا رکھا ہے چوری شدہ یونٹس کے لائن لاسز پورے کر نے کی خاطر مہینہ کے آخری پندرہ روز شہریوں کو ذلیل وخوار کیا جاتا ہے ایکسین واپڈا کی راجن پور میں تعیناتی دوسال مدت سے بھی چھ ماہ اوپر ہوگئے مگر ایم این اے ڈاکٹر حفیظ الرحمن دریشک کی سیاسی آشیر باد سے تعینات ایکسئن کو مکمل چھوٹ حاصل ہے شہریوں محمد احسان ،ولی محمد ،محمد اختر ،کامل علی ،محمد بشیر سمیت درجنوں افراد نے دوران احتجاج الزام عائد کرتے ہوئے مزید کہا کہ ایکسین راجن پور کی جانب سے مسلسل آٹھ گھنٹہ بجلی کی بندش سے شہرمیں پانی نایاب ہوگیا۔ ڈہرکی سے نامہ نگار کے مطابق ڈہرکی حسیکوایس ڈی اوکی زیادتیاں شدیدگرمی کے موسم میں روزانہ 12سے14 گھنٹے بلاجوازبجلی کی سپلائی بند کئی علاقوں میں تین ماہ سے بجلی کی سپلائی مکمل بندکی گئی کے بقایا جات کا بہانہ بنا کر ٹرا نسفارمراتارلیئے گئے ڈہرکی اورگردونواح کے عوام سڑکوں پر نکل آئے سیپکوکے خلاف احتجاجی مظاہرہ اوردھرنا غلاط بلنگ اورزائدریڈنگ بھیجنے پر سیپکو ایس ڈی او ڈہرکی اوردیگرعملہ کے خلاف سخت نعرے بازی بجلی بحال نہ کی گئی توسیپکوچیف سکھرکی آفس کے سامنے دھرنا لگانے کا اعلان۔ شہریوں محمدعمران ،زاہدعلی،جوڑیل خان،دلمراد،علی نواز،محمدنوازاوردیگرنے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ شدیدگرمی کے موسم میں روزانہ 14سے 16گھنٹوں تک بلاجوازبجلی کی سپلائی بند کردی جاتی ہے ۔توہم سیپکو چیف سکھر کی آفس کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کے علاوہ نہ ختم ہونے والا دھرنا لگائیں گے۔ ڈیرہ غازیخان سے نمائندہ خصوصی کے مطابق گرمیوں کی شدت میں اضافہ کیساتھ ہی جہاں شہر بھر میں غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 12سے 14گھنٹوں سے تجاوز کرتا جا رہا ہے اس کیساتھ ہی پینے کے صاف پانی کی قلت بھی بڑھتی جا رہی ہے بجلی کی لوڈ شیڈنگ کے سبب پانی کی سپلائی نہ ملنے سے جہاں فلٹریشن پلانٹ پر پانی کے حصول کیلئے رش بڑھتا جا رہا ہے اس کیساتھ ہی گرمی سے بے حال شہریوں کے آپس میں ضبط کے پیمانے مجروح ہونے سے لڑائی جھگڑوں کے واقعات رونما ہونے لگے ہیں۔ ڈیرہ غازیخان شہر میں جنوبی پنجاب اور اپر پنجاب کے دیگر اضلاع کی نسبت لوڈ شیڈنگ بڑھتی جا رہی ہے ، فرید آباد سمیت شہر کے بیشتر فیڈرز پر مسلسل 6گھنٹے بجلی غائب رہتی ہے جس سے بچوں سمیت مختلف بیماریو ں میں مبتلا لوگوں کو شدید دشواری کا سامنا دیکھنے کو مل رہا ہے فرید آباد اربن 10، 9، 12، کے مکینوں نے شدید احتجاج کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈ شیدنگ کے دورانیہ میں کمی لائی جائے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر