امریکہ سمیت عالمی طاقتوں کا لیبیا کو اسلحہ فراہم کرنے کا فیصلہ

امریکہ سمیت عالمی طاقتوں کا لیبیا کو اسلحہ فراہم کرنے کا فیصلہ
امریکہ سمیت عالمی طاقتوں کا لیبیا کو اسلحہ فراہم کرنے کا فیصلہ

  

ویانا (ویب ڈیسک) امریکہ اور دیگر عالمی طاقتیں لیبیا میں جنگجوﺅں کیخلاف کارروائی کیلئے طرابلس کی بین الاقوامی سطح پر حمایت یافتہ حکومت کو اسلحہ فراہم کرنے کیلئے رضا مندی ظاہر کر دی ہے۔

 ویانا میں بات کرتے ہوئے امریکی وزیر خارجہ جان کیری نے کہا کہ عالمی طاقتیں لیبیا پر لگی ہتھیاروں کی پابندی ختم کرانے میں لیبیا کی مدد کریں گی۔ انھوں نے کہا کہ دولت اسلامیہ لیبیا کے لیے ایک نیا خطرہ ہے اور یہ ضروری ہے کہ اس کو روکا جائے۔ گذشتہ ماہ لیبیا نے متنبہ کیا تھا کہ اگر دولت اسلامیہ کو نہ روکا گیا تو و پورے ملک پر قابض ہو جائے گی۔ عالمی طاقتوں کے ساتھ ملاقات کے بعد جان کیری نے کہا ’لیبیا کی حکومت ملک کو متحد کر سکتی ہے۔  ان کا  کہنا تھا کہدولت اسلامیہ کو شکست دینے کا  یہی ایک طریقہ ہے ۔

یاد رہے کہ لیبیا پر سے ہتھیار خریدنے کی پابندی اٹھانے کی درخواست اقوام متحدہ کی کمیٹی ہی منظور کر سکتی ہے۔ تاہم لیبیا کی جانب سے کی جانے والی درخواست سے لگتا ہے کہ اس کو یقین دہانی کرائی گئی ہے کہ یہ درخواست منظور ہو جائے گی۔ یاد رہے کہ امریکی صدر براک اوباما نے حال ہی میں اعتراف کیا تھا کہ لیبیا میں کرنل قدافی کو معزول کرنے کے بعد کی صورت حال کی پیش بندی نہ کرنا ان کے عہدۂ صدارت کی سب سے بدترین غلطی تھی۔ صدر اوباما امریکی ٹی وی چینل فوکس نیوز پر ایک انٹرویو میں اپنے دورِ اقتدار کے دوران کیے گئے اقدامات کے بارے میں بات کر رہے تھے۔ صدر اوباما نے قدافی کو اقتدار سے علیحدہ کرنے کے بعد کے حالات کے بارے میں مناسب منصوبہ بندی نہ کرنے پر اپنی غلطی کے اعتراف کے باوجود لیبیا میں مداخلت کا دفاع کیا اور کہا کہ یہ صحیح اقدام تھا۔

مزید : عرب دنیا