پاکستان کے خلاف نئی سازش؟ بھارت امریکہ کی مدد سے ایک ایسا’ایٹمی ہتھیار‘ تیار کررہا ہے کہ جان کر آپ کو بھی بے حد غصہ آئے گا

پاکستان کے خلاف نئی سازش؟ بھارت امریکہ کی مدد سے ایک ایسا’ایٹمی ہتھیار‘ ...
پاکستان کے خلاف نئی سازش؟ بھارت امریکہ کی مدد سے ایک ایسا’ایٹمی ہتھیار‘ تیار کررہا ہے کہ جان کر آپ کو بھی بے حد غصہ آئے گا

  

نئی دلی (مانیٹرنگ ڈیسک) جنوبی ایشیاءپر حکمرانی کے خواب دیکھنے والے بھارت کے پیچھے کھڑے امریکا کا کردار پہلے بھی قابل ستائش نہ تھا، لیکن اب اس ملک نے ایک ایسے کام میں بھارت کی مدد شروع کر دی ہے کہ جس کا نتیجہ خطے کے امن کی تباہی کی صورت میں برآمد ہو سکتا ہے۔

ویب سائٹ ڈیفنس نیوز کے مطابق بھارت نے امریکی تعاون کے ساتھ ایٹمی توانائی سے چلنے والا ائر کرافٹ کیرئیر بنانے پر کام شروع کر دیا ہے، جس کی تکمیل 2028ءمیں متوقع ہے، اور کوچی میں اس کام کے ابتدائی مرحلے کا آغاز ہوچکا ہے۔ بھارتی بحریہ کے اندازوں کے مطابق ائیرکرافٹ کیریئر کو 180 میگاواٹ کے نیوکلیئر ری ایکٹر کی ضرورت ہوگی، اور یہ ممکن ہے کہ 90 میگاواٹ کے دو ری ایکٹر استعمال کئے جائیں۔ اس سلسلے میں بھابھا اٹامک ریسرچ سنٹر کے ساتھ گفت وشنید جاری ہے۔

ہماری فوج کی کابل میں موجودگی کی وجہ پاکستان اور افغانستان میں موجود دہشت گردوں کے ٹھکانےہیں:امریکہ

”وشال“ نامی نئے ائیرکرافٹ کیریئر کے مجوزہ ڈیزائن سے واضح ہوتا ہے کہ یہ 60 ہزار سے 70 ہزار ٹن وزنی ہوگا۔ بھارتی بحریہ کے حکام کا کہنا ہے کہ نئے ائیرکرافٹ کیرئیر پر نصب کئے جانے والے ہتھیاروں اور اس پر تعینات ہونے والے خصوصی جنگی جہازوں کے بارے میں بھی غور و خوض جاری ہے۔

رپورٹ کے مطابق بھارتی بحریہ نے ائیرکرافٹ کیریئر کے ڈیزائن کے لئے کئی غیر ملکی کمپنیوں سے رابطہ کیا تھا، جن میں فرانس کی DCNS، روس کی روسوبورونیکسٹ بورڈ اور امریکا کی لاک ہیڈ مارٹن شامل تھیں۔ اب یہ بات سامنے آچکی ہے کہ بھارت اپنے ائیرکرافٹ کیریئر کی تیاری کے لئے امریکا پر انحصار کرے گا۔

بھارت اپنے نئے ائیرکرافٹ کیریئر پر اپنا تیا ر کردہ لائٹ کمبیٹ ائیرکرافٹ تعینات کرنے کا خواہشمند بھی تھا، لیکن ہندوستان ایروناٹکس گزشتہ 25 سال سے اس جنگی جہاز کی تیاری میں مشغول ہے اور تاحال اسے قابل بھروسہ اڑان کے قابل قرار نہیں دیا جاسکا۔ اس صورتحال کے پیش نظر ائیرکرافٹ کیریئر پر تعینات ہونے والے طیاروں کو بھی متوقع طور پر بیرون ملک سے ہی حاصل کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ بھارت دنیا کو مسلسل یہ دھوکہ دے رہا ہے کہ اس کا ایٹمی پروگرام پرامن مقاصد کے لئے ہے۔ امریکا فرانس اور جاپان کے ساتھ نیو کلیئر معاہدے بھی یہی کہہ کر کئے گئے کہ بھارت ایٹمی توانائی کا استعمال پرامن مقاصد کے لئے کرنا چاہتا ہے۔د وسری جانب دفاعی ماہرین کا کہنا ہے کہ ایٹمی توانائی سے چلنے والے ایئرکرافٹ کیریئر کا منصوبہ صرف اس لئے بنایا گیا کہ اسے جارحانہ مقاصد کے لئے استعمال کیا جا سکے، ورنہ بھارت کو ایسے خطرناک ہتھیار کی کیا ضرورت تھی۔

مزید :

بین الاقوامی -