پٹھانکوٹ حملہ ،بھارت نے مولانا مسعود اظہر اورعالمی ادارے’’انٹرپول‘‘کے حوالے سے تاریخ کا سب سے بڑا جھوٹ بول دیا

پٹھانکوٹ حملہ ،بھارت نے مولانا مسعود اظہر اورعالمی ادارے’’انٹرپول‘‘کے ...
پٹھانکوٹ حملہ ،بھارت نے مولانا مسعود اظہر اورعالمی ادارے’’انٹرپول‘‘کے حوالے سے تاریخ کا سب سے بڑا جھوٹ بول دیا

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارتی میڈیا نے دعوی کیا ہے کہ رواں سال جنوری میں پٹھانکوٹ ائیر بیس پر ہونے والے حملے میں بھارتی تحقیقاتی اداروں کی اپیل پر انٹر پول نے کالعدم جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر ،ان کے بھائی مفتی عبد الرؤف اور حملے کے مبینہ ہینڈلر کاشف جان کے خلاف ریڈ کارنر نوٹس جاری کر دیئے ہیں، جبکہ دوسری طرف عالمی ادرے ’’انٹر پول ‘‘ کی ویب سائٹ پر مولانا مسعود اظہر اور ان کے ساتھیوں کے حوالے سے کسی بھی طرح کے نوٹس جاری کرنے کی کوئی خبر  سرے سے موجود ہی نہیں ہے۔

بھارتی نجی چینل ’’زی نیوز ‘‘اور ’’اے بی پی نیوز ‘‘ کے مطابق ہندوستانی ’’نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی ‘‘ نے’’سی بی آئی ‘‘ کے ذریعے مولانا مسعود اظہر کی گرفتاری کے لئے انٹر پول سے رابطہ کرتے ہوئے کالعدم جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر ،مفتی عبد الراؤف اور کاشف جان کے خلاف پٹھانکوٹ حملہ میں مبینہ طور پر ملو ث ہونے کی دستاویزات اور ثبوت فراہم کرتے ہوئے ’’ریڈ وارنٹ ‘‘ جاری کرنے کی اپیل کی تھی ،جس پر انٹر پول نے بھارتی نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی (این آئی اے ) کے ثبوتوں کی تحقیقات کے بعد ’’ریڈ کارنر نوٹس ‘‘ جاری کر دیئے ہیں ،واضح رہے کہ انٹرپول کی جانب سے ’’ریڈ کارنر نوٹس‘‘ گرفتاری کے لئے جاری کیا جاتا ہے۔بھارتی ٹی وی نے دعوی کیا ہے کہ امریکی ایف بی آئی نے پٹھانکوٹ حملے کے دوران مولانا مسعود اظہر ،مفتی عبد الرؤف اور کاشف جان کی نہ صرف موومنٹ کی تصدیق کی ہے بلکہ اس بات کو بھی مان لیا ہے کہ دہشت گردوں کا مولانا مسعود اظہر سے فون پر رابطہ ہوا تھا۔

بھارتی میڈیا کی ان خبروں کے بعد جب انٹر پول کی ویب سائٹ کی جانچ پڑتال کی گئی تو وہاں مولانا مسعود اظہر ،مفتی عبد الرؤف اور کاشف جان کے حوالے سے ’’ریڈ نوٹس ‘‘جاری کرنے کی کوئی خبر نہ تھی اور نہ ہی 253افراد کی اس لسٹ میں ان کا نام تھا جن کے خلاف انٹرپول نے ریڈ نوٹس جاری کر کے ان کے نام ،پتے اور تصاویر مشتہر کی ہیں ۔یاد رہے کہ پٹھانکوٹ حملہ کی تحقیقات کے چند ہفتے قبل پاکستانی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم نے پٹھانکوٹ ائیر بیس حملے کی تحقیقات کے لئے بھارت کا دورہ کیا تھا لیکن بھارتی ایجنسیوں نے پاکستانی ٹیم کو حملے اہم گواہوں سے ملنے نہیں دیا تھا اور تحقیقات میں بھی غیر ضروری رکاوٹیں پیدا کی تھیں ۔

دوسری طرف بھارتی ٹی وی نے یہ بھی دعوی کیا ہے کہ وزیر اعظم نواز شریف اور سرتاج عزیز نے بھارتی تحقیقاتی ٹیم کے دورہ پاکستان کی اجازت دینے کا اشارہ دے دیا ہے ،یاد رہے کہ پاکستانی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم کے دورہ بھارت کے بعد ہندوستان نے بھی پاکستانی حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ ’’این آئی اے ‘‘ کو پٹھانکوٹ حملے کی تحقیقات کے لئے دورہ پاکستان کی اجازت دی جائے مگر پاکستانی حکومت نے بھارتی ٹیم کے دورہ پاکستان کی اجازت دینے سے انکار کر دیا تھا ۔

مزید :

بین الاقوامی -اہم خبریں -