چہ میگوئیاں ختم ، فیصل ٓباد کا بڑا سیاسی خاندان’’ساہی‘‘تحریک انصاد میں شامل

چہ میگوئیاں ختم ، فیصل ٓباد کا بڑا سیاسی خاندان’’ساہی‘‘تحریک انصاد میں ...

فیصل آباد(منیر عمران سے)مسلم لیگ (ن)سے تعلق رکھنے والی فیصل آباد کی ساہی فیملی با لآخر پاکستان تحریک انصاف میں شامل ہو ہی گئی۔ چند ماہ قبل جب فیصل آباد کے سیاسی حلقوں میں ساہی فیملی کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے بارے میں چہ میگوئیاں ہونا شروع ہوئیں تو یہ فیملی ان چہ میگوئیوں کی تردید کرتی رہی مگر گزشتہ روز عمران خان سے ملاقات کے بعدسب افواہیں اورچہ میگوئیاں ختم ہو گئیں اورفیصل آباد کی اس بڑی سیاسی فیملی کی پی ٹی آئی میں شمولیت کی تصدیق ہو گئی چوہدری محمدافضل ساہی اگرچہ عمر میں کرنل(ر) غلام رسول چوہدری ایم این اے سے چھوٹے ہیں مگر سیاسی طور پر اس فیملی کے سربراہ سمجھے جاتے ہیں اس فیملی کا دائرہ انتخاب چک جھمرہ اور اس کے گردونواح کا علاقہ چلا آ رہا ہے اس فیملی کے پاس بیک وقت قومی اسمبلی کی ایک اور صوبائی اسمبلی کی دو نشستیں رہیں‘ یہ فیملی سیاسی لحاظ سے چوہدری نذیر احمد مرحوم کی ہمیشہ حریف ہی رہی‘چوہدری محمد افضل ساہی نے اپنے سیاسی زندگی کا آغاز ضلع کونسل کی ممبر شپ سے کیا‘ پھر ضلع کونسل کے نائب ناظم بھی رہے جہاں سے انہوں نے اسمبلی چلانے کا بنیادی ہنر سیکھا جس کے بعد ق لیگ کے دور میں وہ ایم پی اے منتخب ہو گئے اور چوہدری شجاعت حسین فیملی کے نہایت قابل اعتماد ہونے کے ناطے سے چوہدری پرویز الٰہی کی وزارت اعلی کے دور میں پنجاب اسمبلی کے سپیکر رہے‘2013ء کے الیکشن سے کچھ عرصہ قبل وہ ن لیگ میں شامل ہو گئے اور 2013کا الیکشن انہوں نے ن لیگی ٹکٹ پر جیتا اورحلقہ پی پی 52سے وہ 54814ووٹ لے کر ایم پی اے منتخب ہوئے اور ان کے بڑے بھائی کرنل (ر) غلام رسول ساہی این اے 75سے ایم این اے منتخب ہوئے ایک وقت میں ان کے بھتیجے ذوالقرنین ساہی بھی ایم پی اے رہے. 2013ء تا 2018ء کے دور کے آخری چند ماہ میں جب سیاسی حلقوں میں اس خاندان کی پی ٹی آئی کے ساتھ وابستگیوں کی افواہیں گردش کرنے لگیں تو اس کی ایک وجہ یہ بھی بتائی جارہی تھی ان کے تیسرے بھائی میجر جنرل (ر) محمداکرم ساہی کے عمران خان کے ساتھ گہرے مراسم ہیں ۔اس لئے وہ ن لیگ کو چھوڑ جائیں گے مگر وہ پہلے تو تردید کرتے رہے اور پھر ٹال مٹول پراتر آئے بالآخر ان افواہوں نے حقیقت کا روپ دھا ر لیا اور وہ باضابطہ پی ٹی آئی میں شامل ہو گئے وہ اکیلے نہیں بلکہ پوری فیملی کے ساتھ پی ٹی آئی میں شامل ہوئے ان کے اس علاقہ میں بڑے سیاسی حریف چوہدری نذیر احمد مرحوم(کوہستان گروپ) تھے ان کی وفات کے بعد ان کے صاحبزادے چوہدری زاہد نذیر‘چوہدری عاصم نذیر اور چوہدری شاہد نذیر میدان میں آ گئے ۔ق لیگ کے دور میں ہی چوہدری محمدافضل ساہی نے ضلع کونسل فیصل آباد کی چیئرمین شپ کا الیکشن لڑا تو ان کے مدمقابل رانا زاہد توصیف تھے جنہیں چوہدری زاہدنذیر فیملی کی کھلم کھلا حمایت حاصل تھی اس الیکشن میں چوہدری زاہد نذیر فیملی نے چوہدری افضل ساہی کو اپنے فرنٹ مین رانا زاہد توصیف سے ہروا دیا‘وہ ساہی فیملی کیلئے ایک بڑا سیاسی جھٹکا تھا جس میں انہیں سنبھلتے سنبھلتے دیرلگی ضلع کونسل کی چیئرمین شپ کیلئے دونوں امیدواروں کا تعلق ق لیگ سے ہی تھا مگر رانا زاہد توصیف بھی زیادہ دیر تک ق لیگ میں نہ رہ سکے اور وہ ن لیگ میں شامل ہو گئے‘ رانا زاہد توصیف نے پہل کی اور وہ ساہی فیملی سے پہلے ہی پی ٹی آئی میں شامل ہو گئے جس طرح چند ماہ قبل ساہی فیملی کی پی ٹی آئی میں شمولیت کی افواہیں گردش کر رہی تھیں بالکل اسی طرح گزشتہ کچھ عرصہ سے چوہدری زاہد نذیر فیملی کے بارے میں اسی قسم کی افواہیں چل رہی ہیں اگرچہ وہ فی الحال ان افواہوں کی تردید کر رہے ہیں اور ممکن ہے ساہی فیملی کی پی ٹی آئی میں شمولیت کے بعد وہ ن لیگ کو ہی ترجیح دیں اگر وہ ن لیگ میں ہی رہے تو ساہی فیملی کیلئے سیاسی مشکلات پیدا کرسکتے ہیں۔

مزید : صفحہ اول