فوڈ اتھارٹی میڈیکل سکریننگ لیب کی رپورٹ جاری‘ 2 8 3فوڈ ہینڈلرز مختلف بیماریوں میں مبتلا

فوڈ اتھارٹی میڈیکل سکریننگ لیب کی رپورٹ جاری‘ 2 8 3فوڈ ہینڈلرز مختلف ...

  



ملتان(جنرل رپورٹر)پنجاب فوڈ اتھارٹی میڈیکل سکریننگ لیب کی 30 روزہ کارکردگی رپورٹ جاری کر دی گئی ۔رپورٹ کے مطابق پندہ اپریل سے پندرہ مئی تک 3588 فوڈ (بقیہ نمبر20صفحہ12پر )

ورکرز کی میڈیکل سکریننگ کی گئی جن میں سے283 فوڈ ہینڈلرز مختلف بیماریوں میں مبتلا جبکہ 3305 کے ٹیسٹ پاس ہوئے۔رواں سال میں اب تک لاہور میں 17,290 فوڈ ورکرز کی میڈیکل سکریننگ کی جا چکی ہے۔پنجاب فوڈ ا تھارٹی کے ترجمان نے میڈیکل سکریننگ لیب کی 30 روزہ کارکردگی رپورٹ جاری کر تے ہوئے بتایا کہ پندہ اپریل سے پندرہ مئی تک 3588 فوڈ ورکرز کی میڈیکل سکریننگ کی جا چکی ہے جن میں سے 3305 کے ٹیسٹ پاس ہوئے جبکہ 283 فوڈ ہینڈلرز مختلف بیماریوں میں مبتلاپائے گئے۔مثبت ٹیسٹ رپورٹ آنے والے فوڈ ہینڈلرز میں 58 کو ہیپاٹائٹس سی ، 45 کو ہیپاٹائٹس بی ،133کو ٹائیفائیڈ جبکہ47 فوڈ ورکرز ٹی بی کا شکار پائے گئے۔ترجمان پنجاب فوڈ اتھارٹی کا کہنا تھا کہ فوڈ اتھارٹی سکریننگ لیب رواں سال میں اب تک لاہور میں 17,290 فوڈ ورکرز کی میڈیکل سکریننگ کر چکی ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ خطرناک بیماریوں کے شکار ورکرز کو خوراک کی براہ راست تیاری یا منتقلی سے روک دیا گیا ہے ۔ پنجاب فوڈ اتھارٹی موذی بیماریوں کے شکار ورکرز کو ملازمت سے نکالنے کی سفارش نہیں کرتی بلکہ بیمار ورکرز کو ایسے کام پر لگانے کی ہدایت دیتی ہے جہاں وہ اشیاء خوردونوش کو براہ راست چھو نہ سکیں۔فوڈ انڈسٹری بیمار ورکرز کے علاج کے لیے فنڈز اور دیگر سہولیات یقینی بنائیں۔اس سلسلے میں پنجاب فوڈ اتھارٹی نے ایسے ورکرز کے علاج کے لیے خصوصی فنڈ مختص کیا ہے۔فوڈ اتھارٹی ناصرف خوراک سے متعلق راہنمائی بلکہ ہر ممکن تعاون بھی کرتی ہے۔بیمار ورکرز کے بروقت علاج کے لیے ان کو محکمہ صحت سمیت تمام متعلقہ اداروں کو ریفر کیا جاتا ہے۔

سکریننگ لیب

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...