وصولیوں کی شرح کم ‘ پاور سیکٹر میں مالی بحران شدت اختیار کرگیا

وصولیوں کی شرح کم ‘ پاور سیکٹر میں مالی بحران شدت اختیار کرگیا

  



ملتان (نیوز رپورٹر ) پاور سیکٹر کی واجب الوصول رقم 828ارب50کروڑ روپے سے تجاوز کر گئی ہے رواں مالی سال کے دوران وصولیوں کی شرح میں گزشتہ سالوں سے کم رہی ہے جس سے مالی بحران مزید شدید اور گہرا ہوگیا ہے ۔ سرکاری رپورٹ کے مطابق 30جون 2017تک پاور سیکٹر نے(بقیہ نمبر30صفحہ12پر )

730ارب روپے وصول کرنا تھے31مارچ 2018تک یہ رقوم 282ارب 50کروڑ روپے کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئی ہیں نادہندگان نے مزید 98ارب 50کروڑ روپے دبالیے ہیں ڈیفالٹ کی رقم میں 13فیصد کا مزید اضافہ ہوگیا ہے بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کی ناقص کارکردگی نے پاور سیکٹر کا بحران مزید گہرا اور شدید کردیاہے ذرائع کے مطابق حکومت نے بہتر ریکوری کو یقینی بنانے کے لیے انتظامی شعبہ اور ریکوری کے شعبہ کو الگ الگ کونے کا فیصلہ کیا ہے صوبوں کے ذمہ بقایا جاتا کی رقم میں 25فیصد اضافہ ہوا ہے جون 2017میں صوبوں کے بقایا جات 115ارب روپے تھے ۔ 31مارچ2018ء تک 144ارب روپے ہوگئے جولائی تا مارچ 2017-18کے دوران 94.87ارب روپے کی بلنگ ہوئی جبکہ وصولی 66.12ارب روپے رہی صوبہ پنجاب کے ذمہ 30جون 2017تک 1.63ارب روپے کی رقم تھی جو 31مارچ 2018ء تک 3ارب 68کروڑ روپے ہوگئی ہے ۔

بحران

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...