پشاور میں 2 بڑی چیک پوسٹوں کی سکیورٹی پولیس کے حوالے، گورنر ہاﺅس کے قریب دیوار گرادی گئی

پشاور میں 2 بڑی چیک پوسٹوں کی سکیورٹی پولیس کے حوالے، گورنر ہاﺅس کے قریب ...
پشاور میں 2 بڑی چیک پوسٹوں کی سکیورٹی پولیس کے حوالے، گورنر ہاﺅس کے قریب دیوار گرادی گئی

  

پشاور (ویب ڈیسک) دہشت گردی کے خاتمے اور قیام امن کے بعد پا ک فوج نے تقریباً 10سال بعد صوبائی دارالحکومت پشاور کی دو بڑی چیک پوسٹوں گورا قبرستان اور اسمبلی روڈکے سکیورٹی اختیارات سول انتظامیہ کو سونپ دیئے اور گورنر ہاﺅس کے قریب دیوار گرا کر روڈ کو ٹریفک کے لئے کھول دیا گیا، دونوں چیک پوسٹوں پر پولیس کے 68 مسلح جوانوں کو تعینات کردیا گیا ہے جبکہ فوجی اہلکار دو دن تک نگرانی کیلئے پولیس کے ساتھ موجود ہوں گے، اس کے علاوہ چیف جسٹس آف پاکستان کے احکامات کی روشنی میں گورنر ہاوئس کی جانب جانے والی سڑک پر تعمیر کی گئی دیوار کو بھی مسمار کردیا گیا ہے۔

یوٹیوب چینل سبسکرائب کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

تقریباً10 سال قبل 2009میں خیبرپختونخوا اور فاٹا میں ہسپتالوں، تعلیمی اداروں، مارکیٹوں اور بازاروں کو بم دھماکوں سے تباہ کرنا شروع کیا گیا تھا ، لوگوں کو اغواءکرکے قتل کیا جارہا تھا، دہشت گردوں کی سرکوبی اور حکومتی رٹ بحالی میں فوج، پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے سینکڑ و ں افسران و اہلکاران شہید ہوئے جبکہ سکیورٹی اداروں کی کارروائیوں اور مختلف آپریشنز کے دوران ہزاروں دہشت گرد بھی مارے گئے ،پاک فوج اور پولیس نے عوام کے تعاون سے نہ صرف صوبائی دارالحکومت پشاور بلکہ صوبہ بھر میں مثالی امن قائم کردیاہے جبکہ پولیس فورس بھی مستعد اور اور ہر قسم کے حالات سے نمٹنے کی بھر پور صلاحیت سے لیس ہوگئی ہے جس کی بناءپر پاک آرمی نے پشاور میں امن چوک گورا قبرستان اور خیبرپختونخوا اسمبلی کے قریب قائم دو بڑی چیک پوسٹوں کے اختیارات پشاور پولیس کے حوالے کردیئے ہیں۔

پولیس حکام کے مطابق قیام امن کے بعد مخصوص ناکے بتدریج سول انتظامیہ کے حوالے کئے جا رہے ہیں، ابتدائی طور پر شہر کے دوبڑے سکیورٹی ناکے سول انتظا میہ کے حوالے ہوگئے ہیں دونوں چیک پوسٹوں پرپولیس کے 68 اہلکارتعینات کردیئے گئے ہیں جبکہ فوجی اہلکار دو دن تک نگرانی کے لئے پولیس کے ساتھ موجود ہوں گے ، گوراقبرستان چیک پوسٹ پر 2009 سے آرمی جوان تعینات تھے۔

مزید : علاقائی /خیبرپختون خواہ /پشاور