’’ ہم نے کرنل جوزف کو اس لیے واپس جانے دیا کیونکہ ۔ ۔ ۔‘‘ پاکستانی نوجوان کے قاتل امریکی سفارتکار کے چلے جانے کے بعد بالآخر حکومت پاکستان نے بھی اعلان کردیا، اندر کی بات بتادی

’’ ہم نے کرنل جوزف کو اس لیے واپس جانے دیا کیونکہ ۔ ۔ ۔‘‘ پاکستانی نوجوان ...
 ’’ ہم نے کرنل جوزف کو اس لیے واپس جانے دیا کیونکہ ۔ ۔ ۔‘‘ پاکستانی نوجوان کے قاتل امریکی سفارتکار کے چلے جانے کے بعد بالآخر حکومت پاکستان نے بھی اعلان کردیا، اندر کی بات بتادی

  



اسلام آباد(ویب ڈیسک)  ترجمان دفتر خارجہ نے کہا ہے کہ پاکستانی نوجوان کو گاڑی سے کچلنے والے امریکی سفارتکار کرنل جوزف کو سفارتی استثنیٰ حاصل تھا اس لیے اسے واپس بھیجا گیا۔

ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے ہفتہ وار میڈیا بریفنگ میں کہا کہ امریکی سفارتکار کرنل جوزف کے حوالے سے دیت کے معاملے کا علم نہیں ہے، اسے سفارتی استثنیٰ حاصل تھا اس لیے وہ واپس چلا گیا۔ ڈاکٹر محمد فیصل نے بتایا کہ 15 مئی منگل کو آزاد کشمیر کے علاقے تتہ پانی میں بھارت نے بلااشتعال فائرنگ کی جس سے ایک پاکستانی شہری شہید ہوگیا۔ گزشتہ روز بھارت کے قائم مقام ڈپٹی ہائی کمشنر کو ایل او سی کی خلاف ورزی پر طلب کرکے احتجاج ریکارڈ کرایا گیا۔

ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ رواں سال اب تک بھارتی فوج 1000 سے زائد مرتبہ ایل او سی اور ورکنگ باونڈری کی خلاف ورزیاں کر چکی ہیں جس کے نتیجے میں 24 شہری شہید اور 107 سے زائد زخمی ہوئے۔ ترجمان دفتر خارجہ نے بھارت کی جانب سے مقبوضہ کشمیر میں حریت قیادت کو غیر قانونی طور پر حراست میں لینے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حریت رہنماؤں نے 19 مئی کو سری نگر کے لال چوک کی جانب مارچ کی کال دی ہے۔

مزید : اہم خبریں /قومی


loading...