ہسپتال میں داخل حاملہ خاتون کا معائنہ کرنے ڈاکٹر پہنچ گیا، اس کے ساتھ شرمناک حرکات کرتا رہا لیکن یہ دراصل کون تھا؟ حقیقت ایسی کہ کوئی مریض کبھی سوچ بھی نہیں سکتا کہ یہ بھی ہوسکتا ہے

ہسپتال میں داخل حاملہ خاتون کا معائنہ کرنے ڈاکٹر پہنچ گیا، اس کے ساتھ شرمناک ...
ہسپتال میں داخل حاملہ خاتون کا معائنہ کرنے ڈاکٹر پہنچ گیا، اس کے ساتھ شرمناک حرکات کرتا رہا لیکن یہ دراصل کون تھا؟ حقیقت ایسی کہ کوئی مریض کبھی سوچ بھی نہیں سکتا کہ یہ بھی ہوسکتا ہے

  



لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میںایک ڈاکٹر نے چیک اپ کے لیے ہسپتال آئی حاملہ خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کی کوشش کر ڈالی اور جب اس کے متعلق تفتیش کی گئی تو ایسا انکشاف ہوا کہ کوئی سوچ بھی نہ سکتا تھا۔ دی مرر کی رپورٹ کے مطابق یہ خاتون لندن کے پرنس رائل یونیورسٹی ہسپتال میں معائنے کے لیے گئی تھی جہاں 58سالہ جارج بوائیل نامی شخص نے خاتون کے شوہر کو بتایا کہ ’میں کارڈیالوجسٹ ہوں۔‘ یہ کہہ کر وہ اندر کمرے میں چلا گیا اور وہاں موجود خاتون کے ساتھ شرمناک حرکات شروع کر دیں۔ خاتون نے اس کے متعلق ہسپتال کی نرسوں کو بتایا جنہوں نے تحقیق کی تو معلوم ہوا کہ یہ شخص تو ڈاکٹر ہی نہیں تھا۔ اس پر نرسوں نے پولیس کو اطلاع دے دی اور اسے گرفتار کر لیا گیا۔

سکاٹ لینڈ یارڈ کا کہنا ہے کہ ”ہو سکتا ہے کہ اس شخص نے دیگر کئی خواتین کے ساتھ بھی یہی سلوک کیا ہو اور وہ اسے ڈاکٹر سمجھتی رہی ہوں۔“رپورٹ کے مطابق ملزم کو کروئیڈن کراﺅن کورٹ میں پیش کر دیا گیا ہے۔ متاثرہ خاتون کے شوہر کا کہنا تھا کہ ”یہ نوسرباز ڈاکٹر ہونے کی ایسی بہترین اداکاری کر رہا تھا کہ مجھے ایک لمحے کے لیے بھی شک نہیں گزرا، میں نے اسے اپنی بیوی کی صحت کے متعلق سب کچھ بتایا اور اس نے کسی ماہر ڈاکٹر کی طرح میری باتوں کے جوابات دیئے اور پھر اندر کمرے میں چلا گیا جہاں میری بیوی موجود تھی۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس /برطانیہ


loading...