سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سمیت عرب ممالک نے مل کر ایک ایسے شخص پر سخت ترین پابندیاں لگادیں کہ اسرائیل کی خوشی کی انتہا نہ رہے گی

سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سمیت عرب ممالک نے مل کر ایک ایسے شخص پر سخت ...
سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات سمیت عرب ممالک نے مل کر ایک ایسے شخص پر سخت ترین پابندیاں لگادیں کہ اسرائیل کی خوشی کی انتہا نہ رہے گی

  



دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) اسرائیل اور امت مسلمہ کا کوئی مفاد مشترک نظر نہیں آتا تاہم لبنانی تنظیم حزب اللہ کے معاملے میں اہم ترین خلیجی ممالک اور اسرائیل ایک ہی صفحے پر نظر آ رہے ہیں۔ سعودی عرب اور خلیج تعاون کونسل کے دیگر ارکان ممالک نے گزشتہ روز حزب اللہ کے 10 رہنماﺅں کو دہشتگردوں کی فہرست میں شامل کرلیا، جن میں تنظیم کے سربراہ حسن نصرا للہ اور ان کے نائب نعیم قاسم بھی شامل ہیں۔ خلیجی ممالک نے تنظیم کی چار کمیٹیوں کو بھی ہدف بنایا اور تنظیم کے راہنماﺅں کے بینک اکاﺅنٹ منجمد کرنے کاحکم بھی دیا۔

خلیجی ممالک کا یہ اقدام گزشتہ روز امریکی حکومت کی جانب سے حزب اللہ اور اس کے ممتاز ترین رہنماﺅں پر عائد کی جانے والی پابندیوں کے بعد سامنے آیا ہے۔ جن راہنماﺅں کو دہشتگردوں کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے ان میں حسن نصرا للہ، نعیم قاسم، ابراہیم امین السید، محمد یازبق، حسین خلیل ہاشم، صفی الدین طلال حامیہ، ادہم تباجہ شامل ہیں جبکہ تنظیم سے وابستہ جن اداروں پر پابندی عائد کی گئی ہے ان میں الانما گروپ، الانما انجینئرنگ، علی یوسف چرار، سپیکٹرم گروپ اور مہرٹریڈنگ شامل ہیں۔

مزید : عرب دنیا


loading...