رمضان آ گیا ، سرف ایکسل چاہتاہے کہ آپ دل کو چھو لینے والےاس پیغام کے ذریعے کریں ’ایک نیکی روزانہ ‘

رمضان آ گیا ، سرف ایکسل چاہتاہے کہ آپ دل کو چھو لینے والےاس پیغام کے ذریعے ...
رمضان آ گیا ، سرف ایکسل چاہتاہے کہ آپ دل کو چھو لینے والےاس پیغام کے ذریعے کریں ’ایک نیکی روزانہ ‘

  

رمضان المبارک کا مقدس مہینہ بہترین زندگی کیلئے بہتر ماحول پیدا کرنے کیلئے کام کرنے کی اہمیت پر روشنی ڈالتا ہے ، اس مبارک مہینے تمام برانڈز اپنی کمپینز چلاتے ہیں لیکن اس دوڑ میں سرف ایکسل گزشتہ تین سالوں سے دل جیتنے والے پیغامات دینے میں سب سے آگے ہے جس کا مقصد یہ ہے کہ ”اگر کوئی اچھا کام کرتے ہوئے آپ کے کپڑے گندے ہو جاتے ہیں تو پھر داغ تو اچھے ہوتے ہیں ۔“

’سرف ایکسل‘ کی کمپین کی کہانی یہ دکھاتی ہے کہ بچے اچھے کام کرتے ہوئے اپنے کپڑے گندے کر لیتے ہیں جبکہ اس پیغام میں جو میوز ک دیا گیا ہے اس کے تار بھی دل کو چھو لینے والے ہیں ۔سرف ایکسل کی جانب سے جاری کر دہ اس پیغام کے ذریعے کامیابی کا راستہ دکھایا گیا ہے کہ کس طرح ہم معاشرے کے اہم فرد بن سکتے ہیں ۔

ہمیشہ کی طرح اس سال بھی سرف ایکسل آپ کیلئے دل کو چھونے لینے والا پیغام لے کر آیاہے ، اس فلم میں ایک چھوٹا سابچہ جس کا نام عادل ہے ، یہ رمضان المبارک کی آمد پر موجود حالات سے ناخوش ہے اور اسے ٹھیک کرنے کا بیڑہ بھی خود ہی اٹھاتاہے ۔اس فلم کی کہانی یہ بتاتی ہے کہ عادل کے والد اور اس کے چچا کے آپس میں کچھ اختلافات ہوتے ہیں جس کے باعث وہ ایک دوسرے سے بات چیت بھی نہیں کرتے اور یہ چیز عاد ل  کے دل کو لگتی ہے اور وہ دونوں کے درمیان دوریاں ختم کرنے اور انہیں ایک ساتھ افطاری کیلئے اکھٹاکرنے کیلئے سخت محنت کرتا ہے اور اس میں کامیابی بھی حاصل کرتاہے ۔عادل چھوٹی سی عمر میں اپنی ذمہ داری کو سمجھتے ہوئے اپنے چچا کے گھر پہلے روزے کی افطاری لے کر جاتاہے تاکہ اختلافات کو ختم کر سکے اور اس میں اسے کامیابی بھی ملتی ہے ۔

اس کہانی کی دل کو چھو لینے والے پانچ لمحات یہ ہیں

1 ) جب عادل اپنے والد کی نظروں سے چھپتا چھپاتا ہوا بازار جاتا ہے اور مختلف دکانوں سے افطاری کا سامان خریدتا ہے اور اس بات کا خیال رکھتاہے کہ کوئی اسے دیکھ نہ لے ۔

2) انتہائی خوبصورت دوسرا لمحہ یہ ہے کہ جب عادل تمام چیزیں اکھٹی کرنے کے بعد اپنے چچا اور چچی کے گھر جاتاہے اور جب وہ دروازہ کھولتے ہیں تو ننھا عادل اپنے ننھے ہاتھوں میں ٹرے اٹھائے کھڑا ہے اور اپنے عزیزوں کو ’رمضان‘ کی مبارک باد دیتاہے ،عادل کی محبت دیکھ کر چچی کا دل بھی موم کی طرح پگھل جا تاہے ۔

3)سب سے بہترین پیغام اور خوبصورت لمحہ اس وقت آتا ہے جب عادل کی چچی اپنے بھیتجے کا ہاتھ پکڑ کر اسے اندر لے جاتی ہے تو سامنے کھڑے چچا دونوں کو دیکھ رہے ہوتے ہیں ایسے میں چچی اپنے شوہر کو کہتی ہے کہ ’اپنے تو اپنے ہوتے ہیں ‘۔

4) فلم کی کہانی میں کلائمیکس اس وقت آتاہے جب وہ اپنے چچا اور چچی کے ہمراہ اپنے گھر کے دروازے کے سامنے کھڑا ہوتاہے اور خود کو اپنے والد سے چھپانے کیلئے دونوں کے پیچھے چھپ جاتاہے ۔

5) عادل کی جانب سے یہ اقدام اس کے والد کو بے حد پسند آتاہے اور وہ پہلے تھوڑا چونکتے ہیں لیکن فوری باہر جا کر اپنے بھائی کا ہاتھ پکڑتے ہیں اور گھر کے اندر لا کر انہیں اپنے گلے سے لگا لیتے ہیں ۔

اس پیغام سے ہمیں سبق ملتاہے کہ مہربانی اور محبت کے اقدام بڑے سے بڑے اختلافات کو چٹکی میں مٹا دینے کی طاقت رکھتے ہیں ۔

اس جذبے کے تحت سرف ایکسل روز ایک پیغام جاری کرے گا ’ایک نیکی روزانہ ‘جو کہ نیکیوں کی ایک کبھی نہ ٹوٹنے والی زنجیر بنائے گی ، اگر کچھ اچھا کرتے ہوئے آپ کے کپڑے گندے ہو جاتے ہیں تو اس میں ہچکچانے کی ضرورت نہیں کیونکہ ”اگر نیکی کرنے میں داغ لگ جائیں تو داغ تو اچھے ہوتے ہیں “۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /بزنس /اہم خبریں