کراچی میں ساحل سمندر پر پکنک منانے والے افراد جلدی امراض میں مبتلاہونے لگے

کراچی میں ساحل سمندر پر پکنک منانے والے افراد جلدی امراض میں مبتلاہونے لگے
کراچی میں ساحل سمندر پر پکنک منانے والے افراد جلدی امراض میں مبتلاہونے لگے

  



کراچی (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کونسل آف ریسرچ ان واٹر ریسورسز نے کراچی میں سمندر کے پانی کے حوالے سے چشم کشا رپورٹ جاری کردی ،جس کے مطابق سیوریج کا پانی چار مقامات سے سمندر میں چھوڑا جارہا ہے، جس سے وہاں پکنک منانے والے لوگ جلدی امراض میں مبتلاہو رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان کونسل آف ریسرچ ان واٹر ریسورسز کی کراچی میں سمندری پانی کے حوالے تشویش کن رپورٹ سامنے آئی ہے جس کے مطابق سیوریج کا پانی 4 مقامات پر سمندر میں چھوڑا جارہا ہے،جس کی وجہ سے ساحل پرپکنک منانے والے شہری جلدی امراض میں مبتلا ہورہے ہیں۔

دوسری جانب اس رپورٹ کے سامنے کے بعدواٹر کمیشن کے سربراہ جسٹس (ر) امیر ہانی مسلم نے تحریری حکم نامہ جاری کردیا جس میں پی سی آر کے تحقیقی افسر ڈاکٹر مرتضیٰ کو سمندر میں چھوڑے جانے والے پانی کا جائزہ لینے کا حکم دیا۔حکم نامے میں یہ بھی کہا گیا کہ دو دریا اور سی ویو پر زیر تعمیرعمارتوں کا بھی مکینزم نہیں۔انہوں نے تحریری حکم نامے میں سیکریٹری ڈیفنس کو بھی وضاحت کے لیے پیر کے روز طلب کرلیا ہے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی


loading...