سانحہ کوٹ رادھا کشن ‘3مجرموں کی سزائے موت کا حکم برقرار،2بری

سانحہ کوٹ رادھا کشن ‘3مجرموں کی سزائے موت کا حکم برقرار،2بری

لاہور (نامہ نگار خصوصی ) لاہور ہائیکورٹ نے سانحہ کوٹ رادھا کشن میں ملوث تین مجرموں کی اپیلیں خارج کرتے ہوئے ان سزائے موت کا حکم برقرار رکھا جبکہ دو ملزموں کی اپیلیں منظور کرتے ہوئے انہیں بری کردیا،عدالت عالیہ کے دورکنی بنچ نے مذکورہ تین مجرموں سے متعلق انسدا ددہشت گردی کی عدالت کے سزائے موت کے حکم کی توثیق کرتے ہوئے اس بابت بھیجا گیا ریفرنس بھی منظور کرلیاہے۔جن مجرموں کی سزائے موت برقراررکھی گئی ہے ان میں مہدی خان ،عرفان شکور اورریاض کمبوہ شامل ہیں۔فاضل بنچ نے جن دو ملزموں کی اپیلیں منظور کرتے ہوئے انہیں رہا کرنے کا حکم دیاہے ،ان میں حافظ اشتیاق اور محمد حنیف شامل ہیں۔2014ءمیں کوٹ رادھا کشن میں شہزاد مسیح اور شبنم مسیح نام کے ایک غیر مسلم جوڑے کو مشتعل ہجوم نے توہین قرآن کے الزام میں اینٹوں کے بھٹے میں زندہ جلا دیا گیاتھا،23نومبر 2016ءکو انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے حافظ اشتیاق ،مہدی خان ، ریاض کمبوہ، عرفان شکوراور محمد حنیف کو 4،4مرتبہ سزائے موت کا حکم سنایا تھا۔سزائے موت پانے والے پانچوں ملزموں نے لاہور ہائی کورٹ میں اپیلیں دائر کیں جبکہ انسداد دہشت گردی کی عدالت کی طرف سے سزائے موت کی توثیق کے لئے ریفرنس ہائی کورٹ بھجوایاگیاتھا،جن کی گزشتہ ماہ سماعت مکمل کرکے فاضل بنچ نے فیصلہ محفوظ کرلیا تھا جو گزشتہ روز سنا دیاگیا۔درخواست گزاروں کا موقف تھا کہ،تمام ملزموں کو مقدمہ میں بعد میں نامزد کیا گیا،انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ایک ہی طرح کی شہادتوں پر 5افرادکو سزائے موت کا حکم سنادیا جبکہ دیگر ملزموں کو قتل کے الزام سے بری کردیاگیا،سرکاری وکیل نے اپیلوں کی مخالفت کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ تمام مجرموںکو ٹھوس شواہد کی بنا پر قانون کے مطابق سزائیں دی گئی ہیں۔

مزید : علاقائی