ڈرگ کورٹ کے ذریعے ایک ایک دوائی کی قیمت میں کمی لائینگے: ڈاکٹر ظفر مرزا

ڈرگ کورٹ کے ذریعے ایک ایک دوائی کی قیمت میں کمی لائینگے: ڈاکٹر ظفر مرزا

اسلام آباد (سٹاف رپورٹر) وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے ڈرگ کورٹ کے ذریعے ایک ایک دوائی کی قیمت کم سطح پر لائیں گے،395 ادویات کی قیمتیں کم ہونگی،تقریبا 8 ارب روپے بچت ہوگی، پیسہ سرکاری خزانے میں جائیگا،نئی ادویات جب مارکیٹ میں آئیں گی تو کم کی گئی قیمت کیساتھ آئیں گی، مارکیٹ میں موجود ادویات اسی قیمت پر فروخت ہو نگی،ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی کو ہم ماڈل ریگولیٹری اتھارٹی بنائیں گے۔ جمعرات کو میڈیا بریفنگ میں انکا کہنا تھا ہمیں بہت سی مشکلات ورثے میں پائی ہیں،وز یراعظم عمران خان ہر وزیر کو ہدایات دیتے ہیں کہ ایسے اقدامات کیے جائیں جن عام آدمی خو فائدہ ہو۔ ادویات کی قیمتیں پاکستان میں ایک بہت بڑا مسئلہ رہی ہیں،899 دوائیوں کو ہارڈ شپ کیسز سمجھ کر ان کی قیمتوں کو ریوائز کیا گیا تھا۔ 464 دوائیوں کی قیمتوں سے متعلق عوام میں بہت بے چینی پائی گئی،ان 464 ادویات کی قیمتیں عوام کی پہنچ سے باہر چلی گئی تھیں،اس صورتحال میں وزیراعظم نے حکم جاری کیا کہ 72 گھنٹے میں قیمتیں واپس اپنی اصلی حالت میں لائی جائیں،یہ وہ دن تھے جب مجھے معاون خصوصی کی ذمہ داری سونپی گئی،ہم نے بغور جائزہ کے بعد کچھ تجاویز کابینہ کے سامنے رکھیں اور بتایا ادویہ ساز کمپنیوں سے ہماری بات ہوئی۔ ہمارا پہلا فیصلہ جس کی کابینہ نے توثیق کی وہ یہ تھا کہ 464 میں سے جن ادویات کی قیمتیں 75 فیصد سے زیادہ بڑھائی گئی ان کو واپس 75 فیصد پر لایا جائے،ہو سکتا ہے آپ کو 75 فیصد اضافہ بھی زیادہ لگتا ہولیکن 75 فیصد اضافہ اس خدشے کے پیش نظر کیا کہ کہیں ادویات مارکیٹ سے غائب نہ ہو جائیں۔ انڈسٹری کیساتھ مشاورت کے بعد فیصلہ ہوا ہے نئی ادویات جب مارکیٹ میں آئیں گی تو کم کی گئی قیمت کیساتھ آئیں گی تاہم جو ادویات مارکیٹ میں موجود ہیں وہ اسی قیمت پر فروخت کی جائیں گی جو ان پر درج کی گئی ہے کیونکہ ایک ایک دوائی کے اوپر درج قیمت کو تبدیل کرنا ممکن نہیں،ہم ایک لارجر نیشنل میڈیسنز پالیسی لا رہے ہیں،دوائیوں کی قیمتیں اس لارجر نیشنل میڈیسنز پالیسی کا حصہ ہونگی،اس کے علاوہ دوائیوں کا معیار بھی اس پا لیسی کا حصہ ہو گا۔ 

ڈاکٹر ظفر مرزا

مزید : صفحہ اول